دینی مدارس میں طلبا ء پر مبینہ تشدد روکنے کیلئے درخواست دائر 

دینی مدارس میں طلبا ء پر مبینہ تشدد روکنے کیلئے درخواست دائر 

  

لاہور(نامہ نگار خصوصی)لاہور ہائیکورٹ نے دینی مدارس میں طلبا پر مبینہ تشدد روکنے کے لئے دائر درخواست پروفاقی وزارتِ تعلیم اور مذہبی امور سمیت مدعاعلیہان سے جواب طلب کرلیا حافظ ملک عبدالباسط کھٹانہ کی طرف سے دائر اس درخواست میں موقف اختیار کیاگیاہے کہ دینی مدارس میں تعلیم حاصل کرنے والے طلبا اور طالبات کو جسمانی تشدد کا نشانہ بنایا جاتا ہے پاکستان مدارس تعلیمی بورڈ آرڈیننس 2001 ء کے تحت دینی مدارس کے نصاب، اساتذہ کی تربیت اور دیگرامور کی ذمہ داری حکومت کی ہے پاکستان کا تعلیمی نظام سرکاری، پرائیوٹ سکولوں اور دینی مدارس میں منقسم ہے، اسلام صبر اور امن کی تعلیم دیتا ہے مگر چند اساتذہ مناسب تربیت نہ ہونے کے باعث قرآن حفظ کرنے والے طلباء کو تشدد کا نشانہ بناتے ہیں  مدرسے کے غیر تربیت یافتہ اساتذہ کی جانب سے طالبعلم کو تشدد کا نشانہ بنانے کی ویڈیوز سوشل میڈیا پر وائر ل ہوئی ہیں حکومت کو مدارس میں بچوں پر تشدد روکنے کیلئے اقدامات کرنے کاحکم دیا جائے درخواست میں دینی مدارس کے اساتذہ کے لئے تربیتی ورکشاپس مستقل طورپر کروانے کاحکم دینے کی استدعا بھی کی گئی ہے۔

مبینہ تشدد

مزید :

صفحہ آخر -