سپریم کورٹ ، لائن مین کی ملازمت برخاستگی کےلئے وزارت دفاع کی اپیل مسترد

سپریم کورٹ ، لائن مین کی ملازمت برخاستگی کےلئے وزارت دفاع کی اپیل مسترد
سپریم کورٹ ، لائن مین کی ملازمت برخاستگی کےلئے وزارت دفاع کی اپیل مسترد

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)سپریم کورٹ نے لائن مین کی ملازمت برخاستگی کےلئے وزارت دفاع کی اپیل مستردکردی،چیف جسٹس گلزاراحمد نے کہاکہ غریب بندہ ہے، جبری ریٹائرمنٹ ہوگئی بس کافی ہے۔

نجی ٹی وی ہم نیوز کے مطابق سپریم کورٹ میں لائن مین کی ملازمت برخاستگی کیلئے وزارت دفاع کی اپیل پر سماعت ہوئی ، جسٹس اعجاز الاحسن نے ملازم سے استفسار کیا کہ ڈمپر کیسے چلایا آپ تو ڈرائیور ہی نہیں تھے۔

جسٹس اعجاز الاحسن نے لائن مین سے مکالمہ کرتے ہوئے کہا کہ آپ کا لائسنس بھی جعلی تھا، لائن مین ہمایوں رضا نے جواب دیتے ہوئے کہاکہ مجھے ڈرائیور نے کہا تھا گاڑی چلا لو،جان بوجھ کر ٹکر نہیں ماری، غلطی سے حادثہ ہوا،الیکٹریشن کے اہلخانہ سے معاف مانگ کر صلح بھی کر لی۔

چیف جسٹس گلزاراحمد نے کہاکہ غریب بندہ ہے، جبری ریٹائرمنٹ ہوگئی بس کافی ہے،عدالت نے لائن مین کی ملازمت برخاستگی کےلئے وزارت دفاع کی اپیل مستردکردی اور لیبر کورٹ کا جبری ریٹائرمنٹ کا فیصلہ برقرار رکھا۔

مزید :

قومی -علاقائی -اسلام آباد -