این اے157،میدان خالی نہیں چھوڑیں گے،مہر بانو قریشی

این اے157،میدان خالی نہیں چھوڑیں گے،مہر بانو قریشی

  

ملتان(نیوزرپورٹر)این اے 157 سے پاکستان تحریک انصاف کی امیدوا  مہر بانو قریشی نے کہا ہے کہ این اے 157 کی عوام کو الیکشن کے التوا سے مایوسی ہوئی۔ پی ڈی ایم کی شکست کو سامنے دیکھ کر حکومت نے ضمنی انتخاب سے راہ فرار اختیار کی۔حکومت کیلئے میدان خالی نہیں چھوڑیں گے۔ ہر سمت حکومت کا مقابلہ کریں گے۔ 11ستمبر کو الیکشن ہوتا تو تحریک انصاف(بقیہ نمبر3صفحہ6پر)

 کو بھر پور کامیابی ملنی تھی۔ 16اکتوبر تک تحریک انصاف کے ووٹ بینک میں مزید اضافہ ہوگا۔ الیکشن جب بھی ہوگا بلے پر ٹھپہ ہوگا۔ تحریک انصاف کو یقینی کامیابی ملے گی۔ پاکستان کی عوام نے تبدیلی لانے اور تحریک انصاف کا ساتھ دینے کا عزم کیا ہے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے گزشتہ روزاین اے 157 کی یونین کونسل 89 میں مختلف مقامات پر خواتی کے اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے کہا تحریک انصاف کی مقبولیت اور کامیابی دیکھ کر امپورٹڈ حکمرانوں پر بوکھلاہٹ طاری ہو چکی ہے۔ حکومت کو سمجھ نہیں آ رہا کہ وہ تحریک انصاف کا کیسے مقابلہ کریں۔ تحریک انصاف کا ووٹر بلخصوص تحریک انصاف کا کارکن ڈٹ کرکھڑا ہے۔ این اے 157 کی عوام نے ماضی میں بھی یہاں سے تحریک انصاف پر اعتمادکیا۔ اور ایک بار پھر یہاں کی باشعور عوام بلخصوص خواتین بزرگوں جوانوں نے تحریک انصاف کا ساتھ دینے اور جتوانے کا عزم کیا ہے۔ 16اکتوبر کو ہر طرف بلا ہی بلا ہوگا۔ انہوں نے کہا این اے  157کا ضمنی انتخاب 2افرادکا نہیں 2نظریوں کا الیکشن ہے۔ ایک نظریہ ملک بچانے والوں کا ہے۔ دوسرا نظریہ ملک ڈوبانے والوں کا ہے۔ فیصلہ یہاں کی غیور عوام نے کرنا ہے۔ کہ ملک بچانا ہے یا لوٹوں لٹیروں کا ساتھ دینا ہے۔ این اے 157 کی غیور عوام ملک بچانے والوں کے ساتھ دیں گے۔ قبل ازیں این اے 157 سے تحریک انصاف کی امیدوار محترمہ مہر بانو قریشی نے اپنے ایک وڈیوپیغام میں کہا ہے کہ این اے 157 میں 16اکتوبر کے انتخاب کی تاریخ دی گئی ہے۔ہمیں خدشہ ہے یہ لوگ اس تاریخ پر بھی ضمنی الیکشن کیلئے کھڑے نہیں ہونگے۔لیکن ہم پہلے بھی الیکشن کیلئے تیار تھے اور اب بھی الیکشن کیلئے تیار ہیں۔ ہماری تیاریاں مکمل ہیں۔ 11ستمبر کو اگر انتخاب ہو جاتا تو پی ڈی ایم کے نمائندے کو اپنی مقبولیت کا پتہ چل جاتا اور دودھ کا دودھ پانی کا پانی صاف نظر آ جاتا۔ضمنی انتخاب میں پی ڈی ایم کا نمائندہ جو امپورٹڈ حکمرانوں کا بھی نمائندہ ہے کی جانب سے ضابطہ اخلاق کی دھجیاں اڑائی جا رہی ہیں۔ سرکاری وسائل بلخصوص وفاقی حکومت کی جانب سے ترقیاتی وسائل کا بھر پور استعمال کیا جا رہا ہے۔ ہم نے الیکشن کمیشن کو تحریری درخواست بھجوا دی ہے۔ لیکن ہماری شنوائی نہیں کی جا رہی ہے۔ جو مرضی ہو این اے 157 کی عوام نے فیصلہ کرلیا ہے کہ تحریک انصاف اور عمران خان کو کامیاب کرنا ہے۔ 16اکتوبر کو ایک بار پھر زور و شور سے بلا چلے گا۔ تیر کے ٹکڑے ہونگے۔

مزید :

ملتان صفحہ آخر -