ہندو کے اغواء کی کوشش، اندھڑ گینگ کے دو ڈاکو مقابلے میں مارے گئے 

ہندو کے اغواء کی کوشش، اندھڑ گینگ کے دو ڈاکو مقابلے میں مارے گئے 

  

 رحیم یارخان، صادق آباد(نمائندہ پاکستان، تحصیل رپورٹر)ہند پولیس نے اغوا کی کوشش ناکام بنا دی مقابلے میں اندھڑ گینگ کے دو سرگرم ڈاکو علاقہ میں دہشت اور خوف کی علامت لالا عرف بابا دشتی اور بھوری شرمارے گئے، اندھڑ گینگ کے سات سے آٹھ ڈاکوں نے ایک ہندو کو اغوا کیا تھا  تعاقب پر پولیس پارٹی پر فائرنگ کر دی جوابی فائرنگ میں دو ہلاک باقی فرار ہوگئے، مارے گئے دونوں ڈاکو ہیڈ کانسٹیبل(بقیہ نمبر9صفحہ6پر)

 ممتاز بلا شہید اور چوک ماہی میں نو افراد کے قتل، اغوا برائے تاوان، ڈکیتی و دیگر سنگین جرائم میں ملوث  تھے۔ تفصیل کے مطابق گزشتہ روز شام گئے اندھڑ گینگ کے ڈاکو جن کی تعداد سات سے آٹھ تھی نے چدھڑ چوک کے قریب سے ایک ہندو کو اغوا کیا اور اسے نامعلوم مقام پر منتقل کرنے کے لیے ساتھ لے گئے پولیس نے اطلاع ملتے ہی فوری کارروائی کرتے ہوئے بھاری نفری اور ایلیٹ فور س کے ہمراہ مغوی کی بازیابی اور ڈاکوں کی گرفتاری کے لیے تعاقب شروع کردیا جس پر تھانہ بھونگ کی حدود میں موٹر وے ایم فائیو کے قریب پولیس اور ڈاکوں کا ٹکرا ہو گیا جس پر ڈاکوں نے مغوی کو چھوڑ پر پولیس پارٹی پر فائر کھول دیا جس پر پولیس نے پوزیشنیں سنبھال لیں اور حکمت عملی کے ساتھ جوابی فائرنگ کرتے ہوئے ڈاکوں کو گھیرے لے کر گرفتار کرنے کی کوشش کی فائرنگ کے شدید تبادلے کے دوران دو ڈاکو فائرنگ کی زد میں آکر مارے گئے جبکہ ان کے باقی ساتھی پسپا ہوتے ہوئے فرار ہو گئے، پولیس نے سرچ آپریشن کرتے ہوئے مارے گئے ڈاکوں نعشیں قبضہ میں لے لیں جن کی شناخت علاقہ میں خوف اور دہشت کی علامت سمجھے جانے والے لالاعرف بابا عرف احمد دشتی اور بھوری شر کے ناموں سے ہوئی جوکہ اندھڑ گینگ کے سرگرم اراکین تھے مارے گئے ڈاکو ہیڈ کانسٹیبل ممتاز بلا شہید، ماہی چوک میں پٹرول پمپ پر نو افراد کے قتل،اغوا برائے تاوان، ڈکیتی و دیگر سنگین جرائم میں ملوث تھے پولیس نے مغوی کو اپنی محفوظ تحویل میں لے لیا تھا جبکہ فرار ڈاکوں کی تلاش کے لیے کارروائی جاری رکھے ہوئے ہے، ڈی پی او اختر فاروق نے پولیس ٹیم کی فوری اور کامیاب کاروائی پر انہیں شاباش دی ہے۔ 

مزید :

ملتان صفحہ آخر -