جامعہ زکریا،ایم فل پوزیشن میں مبینہ ردوبدل کیخلاف احتجاج جاری

 جامعہ زکریا،ایم فل پوزیشن میں مبینہ ردوبدل کیخلاف احتجاج جاری

  

 ملتان(سٹاف رپورٹر)جامعہ زکریا شعبہ عربی میں ایم فل کی پوزیشن میں مبینہ ردبدل کے خلاف طلبا  کاگزشتہ روزبھی  احتجاج جاری رہا،اس موقع پر انہوں نے یونیورسٹی کے دونوں مرکزی گیٹوں کو بند کردیا،جس سے 3گھنٹے تک یونیورسٹی شٹل اور دیگر ٹرانسپورٹ بھی ر(بقیہ نمبر28صفحہ6پر)

کی رہی،مظاہرین کا مطالبہ تھا کہ شعبہ عربی ایم فل کے طالب علم حافظ محمد عثمان کی پہلی پوزیشن جو کہ بعض اساتذہ کی ملی بھگت سے تبدیل کردی ہے اس کو بحال کیا جائے،اس موقع پر طلبا نے امتیازی سلوک رکھنے والے اساتذہ کے خلاف نعرے بازی بھی کی،مظاہرین نے3گھنٹے تک احتجاج کیا اور مرکزی گیٹ بند کئے رکھا،احتجاج کے  بعد ایم فل میں پہلی پوزیشن کے مبینہ حقدار حافظ محمد عثمان اور دیگرکچھ طلباوائس چانسلر آفس پہنچے،جہاں کنٹرولر امتحانات،رجسٹرار،آراو اور شعبہ عربی کی فیکلٹی بھی موجود تھی،اس موقع پر متاثرہ طالب علم حافظ محمد عثمان نیسب کے سامنے حلف دیا کہ ان کی پہلی پوزیشن کو دانستہ نیچے لایا گیاہے،علاوہ ازیں مذکورہ طالب علم نیثبوت کے طور پر بعض اساتذہ کی فون پر کی گئی باتوں کی وائس ریکارڈنگ بھی سنائی،یونیورسٹی انتظامیہ نے پوزیشن تبدیل کرنے کے سکینڈل کی تحقیقات کیلیے انکوائری کمیٹی تشکیل دینے کا فیصلہ کیاہے،یونیورسٹی کے بعض حلقوں  کا کہنا ہے کہ پہلی پوزیشن پر حقدار طالب علم کی جگہ ایک طالبہ کو پہلی پوزیشن دینا میرٹ کی دھجیاں اڑانے کے مترادف ہے،وائس چانسلر اس کا ذاتی طور پرنوٹس لیں اور نتائج میں ردبدل کرنے والے ٹیچرز کے خلاف کاروائی کریں تاکہ یونیورسٹی کی دا پر لگی ساکھ بچ سکے، مظاہرین نے موقف اختیار کیا ہے کہ یونیورسٹی انتظامیہ کی جانب سے انکوائری کینام پر احتجاج کرنے والے طلبا کو ہراساں کیاجارہا ہے، جس کی شدید مذمت کی جاتی ہے، مظاہرین نے وائس چانسلر بہا الدین زکریا یونیورسٹی، چانسلر و گورنر پنجاب بلیغ الرحمن، وزیراعلی پنجاب پرویز الہی اور وزیراعظم پاکستان سے مطالبہ کیا ہے کہ میرٹ کی دھجیاں بکھبیرنے والے اساتذہ کے خلاف انکوائری کی جائے اور میرٹ کی دھجیاں بکھیرنے والے آفیسران کے خلاف بھرپور کاروائی کی جائے۔

مزید :

ملتان صفحہ آخر -