سیلاب زدگان کے لئے ابھی بہت کچھ کرنا باقی ہے،میاں اویس علی

سیلاب زدگان کے لئے ابھی بہت کچھ کرنا باقی ہے،میاں اویس علی

  

لاہور(پ ر)انٹرنیشنل ہیومن رائٹس موومنٹ قصور کے صدر اور ہردلعزیزسیاسی وسماجی شخصیت میاں اویس علی نے کہا ہے کہ سیلاب زدگان کی بحالی کیلئے ابھی بہت کچھ کرنا باقی ہے،انہیں وہ سب دیاجائے جوسیلاب کی نذر ہو گیا۔ سیلاب ان کے گھر بار ضرور اپنے ساتھ بہالے گیاہے لیکن کوئی طوفان مصیبت زدہ خاندانوں سے ان کا حوصلہ نہیں چھین سکتا۔مصیبت زدگان کااپنے مستقبل بارے پرامید اورپرعزم ہونا خوش آئند ہے،الحمدللہ وہ ایک پل کیلئے بھی اپنی زند گی، ریاست اور اپنے ہم وطنوں سے مایوس نہیں ہوئے 

۔

۔ اپنے ایک بیان میں میاں اویس علی نے مزید کہا کہ رفاعی ادارے سیلاب زدگان میں امدادی سامان تقسیم کرتے وقت ان کی خودداری اورعزت نفس کابہت زیادہ خیال رکھیں۔مددکرتے وقت مصیبت کے ماروں کی آنکھوں میں ہرگز نہ دیکھیں اوران کے ساتھ تصاویربنانے سے گریز کریں۔انہوں نے کہا کہ قومی ضمیر مصیبت زدہ اپنے ہم وطنوں کی محرومیوں کامداواکرنے کیلئے کوئی کسر نہیں چھوڑے گا۔سیلاب زدہ مقامات پرانسانیت کی خدمت کیلئے سرگرم ہمارے ڈاکٹرزسمیت رضاکاروں کی انسان دوستی اوران کا جذبہ ایثار مستحسن ہے۔انہوں نے کہا کہ جس وقت تک سیلاب زدہ مقامات پرمعمول کی زندگی شروع نہیں ہوجاتی،ہمارے رفاعی ادارے اس وقت تک وہاں امدادی سرگرمیاں جاری رکھیں گے۔ مختلف رفاعی اداروں کے رضاکار مسلسل مصیبت زدگان تک اجناس، ادویات اورضروریات زندگی سمیت دوسرا سامان پہنچا رہے ہیں۔بڑی تعداد میں سیلاب زدگان اپنی بھوک مٹانے اورپیاس بجھانے کیلئے وہاں سجائے جانیوالے دسترخوانوں سے بھی مستفید ہورہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ جوانسان کسی زمینی وآسمانی آفت یا مصیبت کے وقت دوسرے ضرورتمندانسان کے کام نہ آئے وہ حیوان سے بدتر ہے۔

مزید :

علاقائی -