پاکستانیوں کی اکثریت نے سیاستدانوں کو جمہوریت کیلئے سب سے بڑا خطرہ قرار دیدیا

  پاکستانیوں کی اکثریت نے سیاستدانوں کو جمہوریت کیلئے سب سے بڑا خطرہ قرار ...

  

        اسلام آباد (سٹاف رپورٹر) پاکستان کے عوام کی اکثریت نے سیاستدانوں کو ہی جمہوریت کیلئے سب سے بڑا خطرہ قرار دیتے ہوئے کہاہے سیاستدان اقتدار اور اثر و رسوخ کیلئے سیا ست میں آتے ہیں۔ جمہوریت کے عالمی دن کے موقع پر پلڈاٹ کے زیر اہتمام جمہوریت کو درپیش خطرات کے عنوان پر سیمینار کا انعقاد کیا گیا، مقررین میں ایگزیکٹو ڈائریکٹر، گیلپ پاکستان بلال گیلانی،ماہر تعلیم اور کارکن عمار علی جان اور ماہر تعلیم ڈاکٹر سید اکبر زیدی ڈائریکٹر IBA، صدر پلڈاٹ احمد بلال محبوب سمیت دیگر نے شرکت کی، اس موقع پر ایک جائزہ پیش کرتے ہوئے گیلپ پاکستان کے ایگزیکٹو ڈائریکٹر بلال گیلانی نے کہا ہر 5 میں سے 3 پاکستانیوں کی رائے ہے جمہوریت دیگر تمام سیاسی نظاموں سے بہتر ہے پا کستانیوں کی اکثریت یہ بھی مانتی ہے ملک میں آزادی اظہار، آزادانہ انتخابات اور مساوی حقوق موجود ہیں، اگرچہ اکثریت 63فیصد کو یقین ہے سویلین حکومت ملک پر حکومت کر سکتی ہے لیکن ایک بڑی تعداد کو اپنے معاشی انتظام، قانون کے نفاذ اور بدعنوانی کو کم کرنے پر اعتماد نہیں۔ انہوں نے کہا پاکستان میں بڑھتا ہوا ٹرن آوٹ جمہوری عمل پر زیادہ اعتماد کو ظاہر کرتا ہے اور سروے کے دوران لوگ اب بھی فوجی اور ٹیکنو کریٹک حکومتوں کیلئے اعلیٰ حمایت ظاہر کرتے ہیں، ملک میں عدلیہ پر اعتماد بھی بڑھ رہا ہے جبکہ سیاستدانوں کے بارے میں عوامی تاثر بہتر نہیں ہوا اور 81 فیصد پاکستانیوں کا خیال ہے لوگ اقتدار اور اثر و رسوخ کے حصول کیلئے سیاست میں آتے ہیں، جو جمہوریت کیلئے خطرہ ہے، پاکستان میں جمہور یت کو متعدد خطرات کا سامنا ہے لیکن اسے عوامی حمایت حاصل ہے جمہوریت کو کوئی بھی خطرہ پاکستان کیلئے خطرہ ہے۔ ماہر تعلیم اور کارکن ڈاکٹر عمار علی جان نے کہا جمہوریت کیلئے عوا م کی مرضی کے اظہار کے راستے ضروری ہیں۔ عرب دنیا کے برعکس جمہوریت 19ویں صدی سے ہمارے خطے میں گفتگو کا حصہ رہی ہے جہاں جمہوریت کو ترجیحی نظام کے طور پر تسلیم کیا جاتا تھا لیکن لوگوں کو مکمل طور پر تیار ہونے تک کبھی بھی دستیاب نہیں کیا گیا۔ تضاد یہ ہے ریاست کا خیال تھا اسے جمہوریت کیلئے شہریوں کو تیار کرنا ہے۔ پاکستان میں بھی یہی استعماری ذہنیت جاری ہے۔ پاکستان 19ویں صدی سے جنگی حساب کتاب کا حصہ رہا ہے۔ چونکہ سیاسی معیشت تصادم سے اس قدر جڑی ہوئی ہے کہ مکمل جمہوریت کی کبھی اجازت نہیں دی جاتی۔ سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے، ڈاکٹر اکبر زیدی نے کہا جمہوریت کو لاحق خطرات اب ممکنہ نہیں ہیں لیکن بہت حقیقی ہیں، انہوں نے ہمیشہ اصولی طور پر سیاست یا ملک کے تجارتی میدانوں میں فوج کے کردار کی مخالفت کی ہے پاکستان کی جمہوریت کو سیاست میں فوج کی بالادستی کا سامنا کرنا پڑا لیکن یہ تبدیلی 2007 ء میں اسوقت شروع ہوئی جب دوسرے اداکار بھی اسٹیج پر آنا شروع ہوئے ان کا خیال تھا آج اعلیٰ عدلیہ جمہوریت کیلئے ایک بڑا خطرہ بن چکی ہے ان کا یہ بھی ماننا تھا بہت سی خامیوں کے باوجود عمران خان سب سے بڑے جمہوریت پسند ہیں اور انہوں نے گزشتہ 4 ماہ میں جمہوریت کیلئے اپنے سے پہلے کسی بھی لیڈر سے زیادہ شہریوں کو متحرک کیا ہے۔

پاکستانی رائے

مزید :

صفحہ اول -