سکھر، منافع خوروں نے غریب عوام کی زندگی اجیرن کردی

سکھر، منافع خوروں نے غریب عوام کی زندگی اجیرن کردی

  

سکھر(ڈسٹرکٹ رپورٹر)حکومت اور متعلقہ محکموں کی پرسرار خاموشی، ناجائز منافع خوروں نے غریب عوام  کی زندگی اجیرن کردی،سبزیوں، فروٹ، گوشت سمیت اشیاء خوردنوش کی قیمتوں میں بے تحاشہ اضافہ،شہری و سماجی حلقوں میں تشویش کی لہر، بالا حکام سے نوٹس لیکر غریب عوام کو ریلیف فراہمی کا پرزور مطالبہ تفصیلات کے مطابق سندھ کے دیہی و شہری علاقوں بلخصوص سکھر شہر میں مصنوعی مہنگائی نے غریب عوام کی زندگی اجیرن بنا ڈالی ہے حکومت اور متعلقہ محکموں کی پرسرار خاموشی کے بعد ناجائز منافع خور تاجر برادری نے سبزیوں، فروٹ، گوشت سمیت اشیاء خوردنوش کی قیمتوں میں از خود اضافہ کرنا شروع کر دیا ہے جس کے بعد غریب عوام شدید پریشانی میں مبتلا دیکھائی دے رہے ہیں، سکھر کے شہریوں نے سروے کے دوران بتایا کہ حکومت عوام کو ریلیف فراہم کرنے میں مکمل طور پر ناکام دیکھائی دے رہی ہے، حکومت اور متعلقہ محکموں کی جانب سے مہنگائی کنٹرول کرنے کیلئے بلند و بانگ دعوئے تو کرتی ہیں لیکن اس پر کسی قسم کا عملدر آمد ہوتا دیکھائی نہیں دیتا ہے، منافع خور مافیا خودقیمتیں طے کر کے من پسند ریٹ وصول کر رہے ہیں سکھر میں  5 کلوآٹا600 سے 700 میں مرغی کا گوشت 400سے 500بکرے کا گوشت 1400سے 1600روپے، گائے کا گوشت600سے 800 700,روپے کلو، دودھ 120روپے سے 150روپے کلو فروخت کیا جارہا ہے جبکہ مچھلی 400سے 500اور تو اور سبزیوں اور فروٹ کے بھی اپنے ہی ریٹ مقرر کئے جا رہے ہیں ایسا لگتا ہے  ضلع انتظامیہ اور متعلقہ محکمے ان منافع خور مافیہ کے سامنے بے بس ہیں ر کسی بھی دوکان پر کوئی پرائسز لسٹ نظر نہیں آتی اور سبزی فروشوں کے اپنے ہی نرخ نامے ہیں ہر سبزی والاالگ الگ جو دل چاہتا ہے وہ قیمت وصول رہا ہے، شہری و سماجی حلقوں نے بالا حکام سمیت متعلقہ محکموں سے نوٹس لیکر منافع خور مافیہ کے خلاف سخت سے سخت کارروائی عمل میں لاکر،دودھ، گوشت،مرغی،مچھلی،سبزیوں سمیت اشیاء خوردونوش کی قیمتوں کو کنٹرول کرکے عوام کو ریلیف فراہمی کا مطالبہ کیا ہے۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -