لاہور ہائیکورٹ نے بداخلاقی کے بعد قتل ہونیوالی لڑکی کے واقعے کی رپورٹ طلب کرلی

لاہور ہائیکورٹ نے بداخلاقی کے بعد قتل ہونیوالی لڑکی کے واقعے کی رپورٹ طلب ...

لاہور (نامہ نگار خصوصی ) لاہور ہائی کورٹ نے خانپور کی رہائشی لڑکی کی طرف سے زیادتی کا مقدمہ واپس نہ لینے پر اس کے قتل کے واقعہ کا نوٹس لیتے ہوئے ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج رحیم یار خان کو متعلقہ افراد کے خلاف وقوعہ کی غیر جانبدار اور شفاف کار وائی کرنے اور پولیس کی جانب سے اٹھائے گئے اقدامات کی رپورٹ پیش کرنے کی ہدایات جاری کر دی ہیں۔ مقامی اخبار میں شائع ہونے والی خبرکے مطابق مظلوم لڑکی (ص۔پ )جو کہ خانپور کے نواحی گاﺅں چک نمبر36 کی رہائشی تھی کے ساتھ رفاقت علی نے جنسی زیادتی کی ۔ زیادتی کا مقدمہ تھانہ سہجہ میں رفاقت علی اور اسکی بیوی کے خلاف درج کیا گیا۔ کچھ روز بعد ملزمان نے زیادتی کا شکار لڑکی کو مقدمہ واپس لینے کےلئے دھمکانہ شروع کر دیا، جب متوفی نے انکار کیا تو رفاقت علی نے اپنی بیوی اور دو ساتھیوں ناصر علی اور عارف کے ہمراہ مقتولہ کے گھر گھس کر فائرنگ کر کے اس کو قتل کر دیا۔عدالت عالیہ لاہور کے کمپلینٹ سیل نے مذکورہ واقعہ کا نوٹس لیتے ہوئے ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج رحیم یار خان کو واقعہ کی تفصیلی رپورٹ ایک ہفتے میں پیش کرنے کا حکم دیا ہے۔

رپورٹ

مزید : صفحہ آخر