عام انتخابات دو ہزار آٹھ میں پانچ امیدواروں نے ایک سے زیادہ حلقوں میں کامیابی حاصل کی

عام انتخابات دو ہزار آٹھ میں پانچ امیدواروں نے ایک سے زیادہ حلقوں میں ...

                        لاہور(محمد نواز سنگرا/الیکشن سیل) عام انتخابات 2008ءمیں غیر معمولی مقبولیت کے حامل پانچ امیدواروں جاوید ہاشمی، چوہدری نثار علی خان، رانا تنویر حسین، میاں منظور وٹو، عبدل اکبر خان نے ایک سے زیادہ حلقوں سے کامیابی حاصل کی جن کو بعدازاں قانن کے مطابق ایک کے علاوہ دیگر سیٹیں چھوڑنی پڑیں تفصیلات کے مطابق الیکشن 2008ءمیں پانچ امیدواروں نے اپنے سیاسی قد کاٹھ کی بنیاد پر ایک سے زیادہ حلقوں سے کامیابی حاصل کی ان میں مسلم لیگ ن کے جاوید ہاشمی نے راولپنڈی کے این اے 55لاہور کے این اے 123اور ملتان کے این اے 149ملتان سے کامیابی حاصل کی بعدازاں این اے 149ملتان کی سیٹ رکھ سکے مسلم لیگ ن کے چودھری نثار علی نے راولپنڈی کے این 52اور 53سے کامیابی حاصل کی انہوں نے این اے 52چھوڑ دیا مسلم لیگ ن کے رانا تنویر حسین نے شیخوپورہ سے این اے 131اور 132 سے کامیابی حاصل کی بعدازاں 132کی سیٹ رکھ لی آزاد امیدوار میاں منظور وٹو نے اوکاڑہ سے این اے 146اور 147سے کامیابی حاصل کی اور این اے 146کی سیٹ اپنے پاس رکھ لی، پیپلزپارٹی کے عبدل اکبر نے مردان کے این 11اور پی ایف 29سے کامیابی حاصل کر سکی جو بعدازاں قانون کے مطابق پی ایف 29اپنے پاس رکھ لیا ور قومی اسمبلی کی سیٹ سے استعفی دے دیا۔

کامیابی

مزید : صفحہ آخر