بد ترین لوڈشیدنگ جاری شہروں میں چودہ گھنٹے دیہی علاقوں میں بیس گھنٹے بجلی کی فراہمی موطل

بد ترین لوڈشیدنگ جاری شہروں میں چودہ گھنٹے دیہی علاقوں میں بیس گھنٹے ...

                لاہور(کامرس رپورٹر) ملک میں گزشتہ روز بھی بدترین لوڈ شیڈنگ کا سلسلہ جاری رہا شہروں میں چودہ گھٹنے اور دیہی علاقوں میں بیس گھنٹے تک کی لوڈ شیڈنگ کی گئی ۔ وزارت بجلی و پانی کی ہدایت کے باوجود لیسکو سمیت تمام ڈسکوز نے لوڈ شیڈنگ کا شیڈول جاری نہیں کیا ۔گزشتہ روز لاہور کے پوش اور گنجان آباد علاقوں میں مسلسل 12 گھنٹے تک کی لوڈ شیڈنگ کی بھی اطلاعات موصول ہوئی ہیں، علامہ اقبال ٹاﺅن کے علاقے میں منگل کی صبح 8 بجے سے لیکر شام5 بجے تک مسلسل 9 گھنٹے بجلی بند رہی بعد ازاں ٹھیک ایک گھنٹے بعد دوبارہ 2 سے اڑھائی گھنٹے کی لوڈ شیڈنگ کی گئی، اسی طرح لاہور کے دیگر علاقوں میں مرمت ، ٹرانسفارمرز میں خرابی اور دیگر وجوہات کی بنا پر شہریوں کو دن اور رات کے اوقات میں مسلسل کئی گھنٹوں تک بجلی کی لوڈ شیڈنگ کا عذاب سہنا پڑا، اس صورتحال میں بزرگ اور چھوٹے شدید اذیت میں مبتلا ہیں، دوسری جانب ڈسکوز کا موقف ہے کہ نیشنل کنٹرول سسٹم کی جانب سے زبردستی لوڈ شیڈنگ کروائی جاتی ہے جس کے باعث شیڈول پر عمل درآمد ممکن ہی نہیں ہے ۔ بار بار لوڈ شیڈنگ کے باعث اکثر علاقوں میں پانی کی بھی قلت رہی ۔ صوبائی دارالحکومت سمیت مختلف شہروں میں لوگوں کی جانب سے بد ترین لوڈ شیڈنگ کے خلاف مظاہروں کا سلسلہ جاری رہا ۔ مظاہروں میں لوگوں نے حکومت اور واپڈا کے خلاف شدید نعرہ بازی کی ۔ بعض مقامات پر لوگوں نے ٹائر جلا کر سڑکیں بلاک کر دیں ۔ جس سے ٹریفک کا نظام درہم برہم ہو گیا۔ ملک میں صنعتی پہیہ تقریبا جام ہی رہا ۔ دیگر کاروباری سرگرمیاں بھی ٹھپ ہی رہیں ۔ صوبائی دارالحکومت میں دھرم پورہ ، سمن آباد اور نشتر کالونی میں لوگوں نے لوڈ شیڈنگ کے خلاف مظاہرے کئے ۔ انرجی مینجمنٹ سیل کے ذرائع کے مطابق گزشتہ روز بجلی کی مجموعی ڈیمانڈ 14745 میگا واٹ جبکہ پیداوار 8135 میگا واٹ رہی طلب و رسد میں 6610 میگا واٹ کا فرق رہا ۔

مزید : صفحہ اول