چین سے آزاد کشمیر کے راستے پاکستان تک تجارتی راہداری منصوبے پر بھارتی تحفظات مسترد

چین سے آزاد کشمیر کے راستے پاکستان تک تجارتی راہداری منصوبے پر بھارتی تحفظات ...

بیجنگ (کے پی آئی) بھارتی اخبار کے مطابق بھارت نے چین سے آزاد کشمیر کے راستے پاکستان تک تجارتی راہداری کی مجوزہ تعمیرپر تحفظات سے چین کو آگاہ کر دیا ہے ۔ جبکہ اس سلسلے میں نئی دلی کی سخت تشویش کو نظر اندا زکرتے ہوئے بیجنگ نے کہا ہے کہ اس منصوبے کو عملی جامہ پہنانے سے خطے کی پسماندگی کو دور کرنے میں مدد ملے گی۔چین کے زنجیانگ صوبے سے پاکستان کے ساحلی شہر گوادر تک اکنامک کوریڈور آزاد کشمیر کے کئی علاقوں سے گذرے گا۔اس منصوبے کے تحت دونوں ملکوں کو ایک بڑی شاہراہ اور ریلوے لائن کے ذریعے براہ راست جوڑ دیا جائے گا جبکہ تیل اور گیس کی ترسیل کے لئے پائپ لائن بھی بچھادی جائے گی اور اس پر مجموعی طور اربوں امریکی ڈالر خرچ ہونگے۔ تاہم نئی دلی نے چین کے سامنے اس معاملے پر ایک بار پھر سخت تشویش ظاہر کی ہے۔

گزشتہ روزچین کے دارالحکومت بیجنگ میں ہند چین خارجہ سیکریٹریوں کے درمیان مختلف موضوعات کو لیکرہونے والے ’’سٹریٹجک ڈائیلاگ‘‘ کے دوران بھارتی خارجہ سیکریٹری سجاتا سنگھ نے اپنے چینی ہم منصب نائب وزیر خارجہ لیو زین من کے ساتھ بھی یہ مسئلہ اٹھایا۔ مذاکرات کے بعد نامہ نگاروں کے ساتھ گفتگو کے دوران جب سجاتا سنگھ سے یہ پوچھا گیا کہ کیا یہ مسئلہ زیر بحث آیا؟تو انہوں نے کہا’’ہم نے صرف اِس وقت ہی اس مسئلے پر اپنی تشویش ظاہر نہیں کی ہے بلکہ ماضی میں بھی ایسا کیا جاتا رہا ہے، انہوں نے ہمارے خدشات نوٹ کرلئے ہیں‘‘۔ ایک اور سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ بات چیت میں سرحدوں سے جڑے معاملات پر بھی تبادلہ خیال کیا گیا۔ان کا کہنا تھا کہ اس معاملے کو لیکر دونوں ملکوں کے خصوصی نمائندوں کے درمیان اب تک مذاکرات کے17ادوار ہوچکے ہیں۔

مزید : عالمی منظر