بھارتی فوج مقبوضہ کشمیر میں تابکاری موادیورینیم کااستعمال کررہی ہے

بھارتی فوج مقبوضہ کشمیر میں تابکاری موادیورینیم کااستعمال کررہی ہے

سری نگر(کے پی آئی) مقبوضہ کشمیرمیں سول سوسائٹی نے انکشاف کیاہے کہ بھارتی فوج ضلع بڈگام میں توسہ میدان کے علاقے میں توپخانے کی مشقوں کے دوران فائرکیے جانے والے گولوں میں تابکاری موادیورینیم کااستعمال کررہی ہے۔یہ انکشافات ماہر تعلیم، ادیبوں اور دیگر تجارتی اور سیاحتی تنظیموں کے نمائندوں نے سرینگرمیں کشمیر سینٹرفار سوشل اینڈڈویلپمنٹ اسٹڈیزکے زیراہتمام منعقدہ گول میزکانفرنس میں کیے گئے۔ کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے متعدد رہنماؤں نے بھارتی فوج کی طرف سے تابکاری مواد والے توپوں کے گولے عام حالات میں استعمال کرنے کی شدید مذمت کرتے ہوئے کہاکہ اس سے علاقے میں بڑے پیمانے پر تابکاری اثرات پیدا ہوسکتے ہیں۔ کانفرنس میں بھارتی حکومت سے معاملے کانوٹس لینے اور عالمی اداروں سے بھی معاملے کی تحقیقات کا مطالبہ کیا گیا ہے۔ اس موقع پرجمو ں و کشمیر رائٹ ٹوانفارمیشن موومنٹ کے سربراہ اور توسہ میدان بچاؤ فرنٹ کے رکن ڈاکٹر شیخ غلام رسول نے کہاکہ اس سے ہونے والی تابکاری کی وجہ سے لوگوں کی صحت بری طرح متاثر ہورہی ہے اورعلاقے کے آبی ذخائر اور پودے بری طرح متاثر ہو ئے ہیں۔توسہ میدان میں بڑے پیمانے پر فوجی مشقوں کی وجہ سے گرد ونواح کے لوگ ذہنی امراض میں مبتلا ہوچکے ہیں۔ 20فیصد لوگ سماعت سے محروم اور 40فیصد لوگ جسمانی طورپر معذور ہوچکے ہیں۔

فوج نے گن پاؤڈر کا استعمال کر کے 30ہزار سے زائد درختوں کو نذرآتش کیا ہے۔ دریں اثنا مقبوضہ کشمیر میں نوجوانوں نے اعلیٰ تعلیم کے کٹھ پتلی وزیر محمد اکبر لون کے قافلے پر اس وقت پتھراؤکیا جب وہ پتھری بل حاجن میں کارکنوں کے ایک اجلاس کی شرکت کے لیے جارہے تھے ۔کشمیر میڈیا سروس کے مطابق مشتعل نوجوانوں نے حاجن میں نئے پل کے قریب کٹھ پتلی وزیر کے قافلے پر پتھراؤ کیا۔ ادھر لوگوں نے سرینگر کے علاقے جمالٹہ میں بھارت نواز نیشنل کانفرنس کے 2کارکنوں کے گھروں پر حملہ کیا اور پیٹرول بم پھینکے۔ علاوہ ازیں مقبوضہ کشمیر میں حریت رہنماؤں شبیر احمد شاہ، محمد یوسف نقاش اور شبیر احمد ڈار نے لوگوں سے اپیل کی ہے کہ وہ بھارت کے نام نہاد انتخابات کا مکمل بائیکاٹ کریں۔ بعدمیں شبیر شاہ کو اونتی پورہ میں گرفتار کرلیا گیا۔

مزید : عالمی منظر