سینئر اور جونئیر ہاکی ٹیموں کی مینجمنٹ اور سلیکشن کمیٹی کا اعلان

سینئر اور جونئیر ہاکی ٹیموں کی مینجمنٹ اور سلیکشن کمیٹی کا اعلان

لاہور(سپورٹس رپورٹر) پاکستان ہاکی فیڈریشن نے سینئر اور جونیئر ہاکی ٹیموں کی مینجمنٹ اور سلیکشن کمیٹی کا اعلان کردیا ۔پی ایچ ایف کے 27ویں ایگزیکٹو بورڈ کا اجلاس صدر پی ایچ ایف اختر رسول کی صدارت میں نیشنل ہاکی سٹیڈیم لاہور میں منعقد ہو اجس میں ہاکی کی ترقی کے لئے اہم اقدامات کی منظوری دی گئی ۔اجلاس کے بعد پی ایچ ایف کے سیکرٹری رانا مجاہد نے اصلاح الدین صدیقی ،شہناز شیخ ،شہباز سینئر اور اخلاق احمد کے ہمراہ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے بتایا کہ اجلاس میں سینئر قومی ہاکی ٹیم کی 2016اولمپکس تک مینجمنٹ کی تقرری کی گئی ہے جن میں ہیڈ کوچ مینجر شہناز شیخ اور کوچز میں ناصر علی ،ملک شفقت ،سمیر حسین، ابوذر آمراﺅشامل ہیں جبکہ جونیئر ہاکی ورلڈ کپ تک بننے والی نئی منیجمنٹ میں چیف کوچ و منیجر منظور الحسن ہوں گے جبکہ کوچنگ سٹاف میں قمر ابراہیم، کامران اشرف، ریحان بٹ، محمد عرفان سینئر اور محمد اخلاق شامل ہیں۔اصلاح الدین صدیقی کو قومی ٹیم کا چیف سلیکٹر مقرر کیا گیا ہے جبکہ دیگر ارکان میں ارشد چوہدری، خالد بشیر، مصدق حسین، ایاز محمود شامل ہیں ۔سلیکشن کمیٹی قومی ہاکی ٹیم کے ساتھ ساتھ ڈومیسٹک سطح پر بھی اپنے فرائض سر انجام دے گی ۔ رانا مجاہد علی نے بتایا کہ فیڈریشن کے صدر اور سیکرٹری قومی ہاکی ٹیم کا ٹارگٹ مقرر نہیں کریں گے بلکہ یہ ہدف ٹیم منیجمنٹ کرے گی۔انہوں نے کہا کہ طاہر زمان ٹیم منیجمنٹ سے وابستہ نہیں ہوںگے لیکن وہ کوچنگ پروگرام کے ڈائریکٹر ہوں گے۔ سیکرٹری پی ایچ ایف نے کہا کہ مذید ناراض اولیمپئنز کو منانے کے لئے بھی ایک کمیٹی تشکیل دی گئی ہے جس میں اصلاح الدین صدیقی، شاہد علی خان، اخترالاسلام اور شہباز سینئر شامل ہیں۔انہوں نے کہا کہ اجلاس میں پی ایچ ایف کے زیر اہتمام ڈومیسٹک سطح پر ہونے والے ایونٹس میں کھلاڑیوں کی عمر کی حد تیس سال سے بڑھا کر 35برس تک کر دی گئی ہے۔ایک سوال پر رانا مجاہد علی کا کہنا تھا کہ ماضی کے تمام عظیم کھلاڑیوں کو ایک پلیٹ فارم پر اکٹھے ہو جانا خوش آئند ہے جس کا فائدہ قومی کھیل کو ہوگا۔ پنجاب حکومت سے کچھ گرانٹ ملی ہے اور باقی ابھی ملنے والی ہے ۔ نو منتخب چیف سلیکٹر اصلاح الدین صدیقی نے کہا کہ ماضی میں دنیا بھر میں ہمارا کرکٹ، ہاکی اور سکواش میںایک نام تھا، قومی کھیل کو اس کا کھویا ہوا مقام واپس دلانا ہماری ترجیح ہوگی۔ ہم عہدوں کے لئے نہیں بلکہ ہاکی کی ترقی اور ملک کا نام روشن کرنے کے لئے کے لئے ایک جگہ اکٹھے ہوئے ہیں، ہم سے صدر پی ایچ ایف اختر رسول اور سیکرٹری رانا مجاہد علی نے ایک پلیٹ فارم پر اکٹھے ہونے کے لئے رابطہ کیا تو ہم نے ان کی پیشکش کا مثبت جواب دیااور اس دوران عہدوں کے حصول کی کوئی بات زیر بحث نہیں رہی ، ہمارا موقف تھا کہ ہر پی ایچ ایف نے ہر فیصلے میرٹ پر ہونے چاہیے ۔ہر عہدے کے لئے صحیح شخص ہونا چاہئے۔۔چیف کوچ شہناز شیخ نے کہا کہ ہمارا ہدف ایشین گیمز ہے، ٹورنامنٹ میں کھلاڑیوں کی مسنگ کی اوسط 65فیصد ہے اس کو 50پر لے کر آئیں گے جبکہ پانچ ٹاپ یورپی ٹیموں کے خلاف ہماری ٹیم کی شکست کا مارجن بہت کم ہے جس محنت سے دور کیا جاسکتا ہے ۔شہباز سینئر نے کہا کہ پی ایچ ایف کے سیکرٹری رانا مجاہد علی میرے پاس جدہ آئے اورانہوں نے مل جل کر ہاکی کو بہتر کرنے کی درخواست کی جسے میں نے قبول کرلیا ، ہمیں عہدوں کا کوئی لالچ نہیں،ہم چاہتے ہیں کہ سینئر کو عزت ملے۔ 

مزید : کھیل اور کھلاڑی