نومولود بھی نسلی تعصب کا شکار ہو سکتے ہیں

نومولود بھی نسلی تعصب کا شکار ہو سکتے ہیں
نومولود بھی نسلی تعصب کا شکار ہو سکتے ہیں

  

واشنگٹن(بیورو رپورٹ)آپ نے اکثر سنا ہو گاکہ ”بچے من کے سچے“لیکن جدید تحقیق نے ثابت کیا ہے کہ نسلی تعصب صرف بالغوں میں نہیں ہوتا بلکہ نومولود بھی اپنا دوست چننے میں نسلی تعصب کا مظاہرہ کر سکتے ہیں۔یونیورسٹی آف واشنگٹن نے حال ہی میں ایک دلچسپ تحقیق کی ہے جس میں تحقیق کاروں نے سفید اور سیاہ فام بچوں کا رد عمل جاننے کیلئے ایک تحقیق کی اور اس میں دلچسپ حقائق معلوم ہوئے۔ تحقیق کاروں نے بچوں کو دو گروہوں میں تقسیم کیا اور ان میں کھلونوں کی تقسیم کی، ان بچوں نے تقسیم کار گروہ (جوکہ ایشیائی نژاد، امریکی اور یورپی نژاد بچوں پر مشتمل تھا)کے ساتھ مختلف رد عمل ظاہر کیا۔ سفید فارم بچے سفید فارم گروہ کے نمائندوں کے ساتھ زیادہ سکون میں تھے جبکہ ایشائی نژاد بچے ایشائی نژاد افراد کے ساتھ سکون میں تھے۔ تحقیق کاروں کا کہنا ہے کہ گوکہ ان تجربات پر حتمی فیصلہ ناممکن ہے لیکن یہ جاننے میں ضرور مدد ملی کہ بچے بھی اپنی ہی نسل کے لوگوں کے ساتھ زیادہ سکون میں ہوتے ہیں۔ 

مزید : تعلیم و صحت