نواز ، زرداری ملاقات خوش آئند ہے:قومی قائدیں

نواز ، زرداری ملاقات خوش آئند ہے:قومی قائدیں
نواز ، زرداری ملاقات خوش آئند ہے:قومی قائدیں

  

لاہور (جنرل رپورٹر/سٹاف رپورٹر/سپیشل رپورٹر) وزیراعظم میاں محمد نواز شریف سے سابق صدر مملکت آصف علی زرداری کی ملاقات پر ملک کی سیاسی و مذہبی جماعتوں نے اپنے ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ دونوں سیاسی راہنماؤں کی ملاقات ایک خوش آئند بات ہے ملکی سیاسی ایشوز کو مشترکہ طور پر حل کرنے کے لئے تمام سیاسی جماعتوں کو ایک دوسرے کے ساتھ ملاقاتوں کا سلسلہ جاری رکھنا چاہئے اور اپنے سیاسی نظریاتی اختلافات کو بالائے طاق رکھ کر ملکی فلاح و بہبود کا کام کرنا چاہئے۔مسلم لیگ (ن) کے راہنما راجہ ظفر الحق نے کہا کہ وزیراعظم میاں محمد نواز شریف اہم قومی ایشوز پر ملک کی سیاسی جماعتوں کے راہنماؤں سے آئندہ بھی ملاقاتوں کا سلسلہ جاری رکھیں گے وزیراعظم کی جانب سے کی جانے والی اس ملاقات کو ملک کی تمام سیاسی جماعوتں نے سراہا ہے اور قرار دیا ہے کہ یہ جمہوریت کے لئے ایک نیک شگون ہے آنے والے دنوں میں بھی وزیراعظم ہاؤس میں وزیراعظم دیگر راہنماؤں سے ملاقاتیں شروع کریں گے اور قوم کو ان میں بھی اچھی خبر ہی سننے کو ملے گی۔ پیپلز پارٹی پنجاب کے صدر میاں منظور احمد وٹو اور سیکرٹری اطلاعات عابد صدیقی نے کہا کہ پیپلز پارٹی نے ہمیشہ جمیوری کردار ادا کیا ہے اور اب بھی ہم جمہوریت کی مضبوطی کی خاطر اپنا رول ادا کرتے رہیں گے سابق صدر مملکت آصف علی زرداری ملک میں جمہوریت کی مضبوطی کے بانی ہیں اور ان کی مفاہمت کی سیاست کی وجہ سے آج ملک میں جمہوری دور کا دور دورہ ہے اس بات پر انہیں جتنا بھی خراج تحسین پیش کیا جائے کم ہے ۔سیکرٹری جنرل جماعت اسلامی پاکستان لیاقت بلوچ نے کہاہے کہ وزیراعظم میاں نوازشریف اور سابق صدر آصف علی زرداری کی اپنی ٹیموں کے ساتھ ملاقات اہم اور معنی خیز ہے ۔ یہ ملاقات پاکستان کی عسکری قوتوں کے لیے پیغام بھی ہوسکتی ہے اور این آر او کا حصہ بھی ۔ سیاسی رابطے اور ملاقاتیں سیاست میں معیوب نہیں لیکن پی پی پی اور مسلم لیگ ن کے درمیان درپردہ رابطے کہیں نہ کہیں ظاہر ہو جاتے ہیں ۔ دونوں جماعتیں سٹیٹس کو برقرار رکھنے کی قائل ہیں ۔ انہی امور پر ان کا اتفاق مضبوط کرنا ہی وجہ ہوسکتی ہے ۔لیاقت بلوچ نے کہاکہ جمہوری پارلیمانی نظام ہر قیمت پر قائم رہنا چاہیے ۔ فوج کو آئین سے بالاقدم اٹھانے کا حق نہیں ۔ جمہوری عمل کے تحفظ کے لیے تما م جمہوری قوتیں متحد ہیں ۔ جمہوریت کی کمزور ی اور بے وزن ہونے کی ذمہ دار جمہوریت کے نام پر اقتدار حاصل کرنے والی جماعتیں خود ہیں ۔ ان کے دور اقتدار میں مراعات یافتہ طبقہ کو تحفظ دیا جاتا ہے اور غریب عوام سے جینے کا حق بھی چھین لیا جاتاہے ۔ انہوں نے کہاکہ حکمران جمہوریت کے استحکام کے لیے آئین پر عملدرآمد ، عدلیہ کی آزادی اور فیصلوں کو تسلیم کریں ۔ کرپشن ختم کر کے قومی وسائل کی منصفانہ تقسیم کا اسلوب اختیار کیا جائے ۔ انہوں نے کہاکہ جماعت اسلامی آئین ، جمہوریت کے تحفظ اور ملک میں اسلامی نظام کے نفاذ اور امانت و دیانت کی بنیاد پر ریاستی نظام کی تشکیل کی جدوجہد جاری رکھے گی ۔

مزید : لاہور