مریخ پر جانے کا منصوبہ ٹھپ

مریخ پر جانے کا منصوبہ ٹھپ
مریخ پر جانے کا منصوبہ ٹھپ

  

نیویارک (بیورو رپورٹ) ایک تازہ دریافت سے مریخ پر انسانوں کی بستی بسانے کے منصوبوں کو بڑا دھچکا لگا ہے۔ سائنسدانوں کو احساس ہوا ہے کہ خلاء میں سفر کرنے سے آنکھوں کو سنجیدہ یا مستقل نقصان پہ نچ سکتا ہے۔ ناسا کی ایک رپورٹ کے مطابق خلاء میں رہنے سے انسانی صحت پر منفی اثرات پڑتے ہیں کیونکہ وہاں کا ماحول انسانوں کے لئے موزوں نہیں ہے۔ رپورٹ میں اس بات کا تذکرہ بھی کیا گیا ہے کہ گزشتہ چالیس سال سے اس کی مثالیں موجود تھیں کہ خلاء کے سفر نے قوت بینائی پر اثر ڈالا لیکن تحقیق کے نتیجے میں ثابت ہوا ہے کہ یہ ایک بے حد سنجیدہ مسئلہ ہے اور زیادہ عرصہ خلاء میں رہنے سے آنکھوں کو مستقل نقصان بھی پہنچ سکتا ہے۔ سائنسدانوں کا کہنا ہے کہ اس کی وجہ کشش ثقل کے نہ ہونے کی وجہ سے دماغ پر دباؤ بڑھنا بھی ہوسکتی ہے۔ امریکی نیشنل اکیڈمی آف سائنس کی جانب سے جاری کردہ تحقیق میں کہا گیا ہے کہ بین الاقوامی خلائی اڈے پر 6 ماہ سے زائد عرصہ گزارنے والے 60 فیصد خلا بازوں کی قوت بینائی متاثر ہوئی ہے (تحقیق میں کل 300 خلاء باز شامل تھے)۔ ماہرین کا کہنا ہے کہ خلاء سے متعلق عزائم کو عملی جامہ پہنانے سے قبل ضروری ہے کہا س مسئلے کی وجوہات تلاش کی جائیں اور اس کا حل نکالا جائے۔

مزید : سائنس اور ٹیکنالوجی