بندر بن سلطان نے وہ وعدہ کیا جو پورا نہ ہو سکا

بندر بن سلطان نے وہ وعدہ کیا جو پورا نہ ہو سکا
بندر بن سلطان نے وہ وعدہ کیا جو پورا نہ ہو سکا

  

ابو ظہبی (بیورو نیوز)متحدہ عرب امارات کے اخبار ”دی نیشنل“ نے دعویٰ کیا ہے کہ سابق سعودی انٹیلی جنس چیف بندر بن سلطان کو اس لئے ہٹایا گیا کہ وہ شام کے بارے میں اپنا وعدہ پو را نہ کر سکے۔ اخبار کا کہنا ہے کہ گو کہ ان کے ہٹائے جانے کی وجہ بالکل واضح نہ ہے لیکن لگتا ہے کہ بندر بن سلطان کا خیال تھا کہ وہ شام میں صدر بشار الاسد کے خلاف تحریک کو منظم کرکے ان کی حکومت کا تختہ الٹیں گے۔ گوکہ بند بن سلطان سفارت کاری میں وسیع تجربہ رکھتے ہیں اور ان کا خیال تھا کہ وہ با آسانی یہ عمل سر انجام دے دیں گے لیکن ایسا کچھ بھی نہیں ہوا۔ سعودی حکومت ابھی تک صرف یہ کہہ رہی ہے کہ بند ر بن سلطان نے طبیعت کی ناسازی کے باعث استعفیٰ دیا۔ سرکاری ریلیز میں کہا گیا ہے کہ وہ مزید خدمات سر انجام نہیں دے سکتے اور ان کی جگہ محمد بن نائف کو انٹیلی جنس چیف لگایا جا رہا ہے۔

مزید : بین الاقوامی