پاکستان کسی ایک مذہب یا مسلک کا نہیں تمام پاکستانیوں کی ملکیت ہے :خواجہ آصف

پاکستان کسی ایک مذہب یا مسلک کا نہیں تمام پاکستانیوں کی ملکیت ہے :خواجہ آصف

سیالکوٹ(آئی این پی) وزیر دفاع ،پانی وبجلی خواجہ محمد آصف نے کہا ہے کہ پاکستان ، کسی ایک مذہب یا مسلک کا ملک نہیں بلکہ تمام پاکستانیوں کی ملکیت ہے اس میں جو بھی بستا ہے اس کا تعلق کسی بھی مذہب یا فرقہ سے ہو یہ اس کا پاکستان ہے ۔ انہوں نے کہاکہ مفکر پاکستان اور بانی ء پاکستان بڑے روشن خیال لوگ تھے ان پیغام ، فلسفہ اور شاعری میں نفرت کی گنجائش بھی نہیں ہے ۔ انہوں نے کہاکہ دین کے نام پر نفرت پھیلانا سب سے بڑا جرم ہے اس کے سد باب کیلئے ریاست چاہے۔وفاقی ہو یا صوبائی قانون کی پوری طاقت کے ساتھ بندھ باندھنا چاہیئے ۔ انہوں نے کہاکہ نفرتوں کا مقابلہ نفرت سے نہیں اور نہ ہی متشدد طریقے سے کیا جاسکتا ہے بلکہ کا مقابلہ آپ ؐ کے ازلی اور ابدی پیغام محبت اور تعلیم کی روشنی سے ہی کرسکتے ہیں ۔ انہوں نے کہاکہ ہمیں نئی نسل کو وہ ورثہ منتقل کرنا ہے جو رحمت، انصاف، برداشت، پیارکا ہے اور اگر یہ ہو جاتا ہے تو ہم سمجھ سکتے ہیں ہم نے اپنی زندگیاں ضائع نہیں کیں ۔ان خیالات کا اظہارانہوں نے یونیورسٹی آف گجرات سب کیمپس سیالکوٹ کے ساڑھے سو طلباء و طالبات میں پرائم منسٹر لیپ ٹاپ اسکیم کے تحت لیپ ٹاپ(کمپیوٹر) تقسیم کرنے کے سلسلہ میں منعقدہ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ وفاقی وزیر دفاع ،پانی وبجلی خواجہ محمد آصف نے کہا ہے کہ وطن عزیز کی کل آبادی کا 60فیصد نوجوانوں پر مشتمل ہے اتنی بڑی تعداد میں نوجوان شاید ہ دنیا کے کسی اورملک میں ہوں اگر آج ہم نے نوجوان نسل کی تعلیم و تربیت کیلئے ان پر سرمایہ کاری نہ کی تو یہ قیمتی اثاثہ ملک کی ترقی اور خوشحالی کا باعث بننے کی بجائے تباہی کا سبب بن جائے گا یہی وجہ ہے کہ مسلم لیگ ن کے وفاقی اور صوبائی کی حکومت کی نگاہ کا مرکز یوتھ ہے جن کو آگے بڑھنے کیلئے ہر ممکن اقدمات کررہی ہیں ۔ نوجوانوں کے کردار اور شخصیت کواعلیٰ اور ارفع اقدار کی زیور سے آراستہ کرنے کی والدین اوراساتذہ کی مشترکہ ذمہ داری ہے ۔ وفاقی وزیر دفاع خواجہ محمد آصف نے پنجاب یونیورسٹی اور پاچا خاں یونیورسٹی میں ہونے والے حالیہ واقعات پر اظہار افسوس کرتے ہوئے کہا کہ ایسے واقعات کے رونما ہونے سے پاکستان عالمی میڈیا کی جانب سے سخت تنقیدکی زد میں ہے ۔ انہوں نے کہاکہ وجہ تخلیق کائنات خاتم النبیین حضرت محمد صلی اللہ علیہ وآالہ وسلم رحمتہ للعالمین بن کر آئے اور پیار، محبت اور رواداری کاازلی اور ابدی پیغام دیااس امن کی پیغام کی تعبیر نفرت ، عدم برداشت، تشد د ، غیر مساوات ، منفی رویوں اور تنگ نظری سے کرنا ناانصافی اور ظلم ہے ۔ انہوں نے کہاکہ مغرب اسلام کو متشدد فوبیا کاشکار قرار دیتا ہے اور دوسری جانب انتہا پسند دہشت گرد اپنے سوا کسی کو مسلمان نہیں سمجھتے اور ساری امہ کو کافر کہتے ہیں ان دونوں سوچوں کے درمیان 1.6ارب مسلمان پھنس کررہ گئے ہیں ۔

خواجہ آصف

مزید : کراچی صفحہ اول