پاناما کیس فیصلے سے کرپشن کا خاتمہ اور حقیقی تبدیلی آئیگی :معراج الہدیٰ صدیقی

پاناما کیس فیصلے سے کرپشن کا خاتمہ اور حقیقی تبدیلی آئیگی :معراج الہدیٰ ...

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


کراچی (نعیم الدین ) پانامہ لیکس کا فیصلہ ایک نئی تاریخ رقم کرے گا، اور اس فیصلے کو تاریخ میں سنہری حرفوں میں لکھا جائے گا، پاکستان میں سی پیک منصوبے سے تمام صوبوں کو بھرپور فائدہ حاصل ہوگا۔کرپشن ملک کا ایک بڑا مسئلہ ہے اس میں تاحال کوئی کمی نہیں آئی ہے ، خصوصاَ سندھ بھر میں کرپشن انتہا کو پہنچ گئی ہے۔ ان خیالات کا اظہار جماعت اسلامی سندھ کے امیر ڈاکٹر معراج الہدیٰ صدیقی نے روزنامہ پاکستان سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے کہاکہ حکمرانوں نے ملک کو لوٹ کر اندرون و بیرون ملک خزانے کے انبار اکٹھے کیے ہوئے ہیں۔لوٹ مار کا یہ سلسلہ آج بھی جاری ہے جس کا راستہ کوئی بھی نہیں روک پارہا ہے۔ اس وقت ملک میں کرپشن کا خاتمہ اور حقیقی تبدیلی پانامہ لیکس کے فیصلے پر منحصر ہے۔ حکمرانوں کی لوٹ مار ثابت ہوچکی ہے۔ ہمیں امید ہے کہ پاکستان کی عدلیہ انصاف کے ساتھ تاریخی فیصلہ صادر کرے گی جس کے اثرات ملک میں ہمیشہ کیلئے پڑیں گے ۔ سی پیک منصوبے کے حوالے سے پوچھے گئے سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ اس منصوبے سے ملک میں استحکام اور خوشحالی آئے گی ، اس منصوبے سے ٹرانسپورٹ ،توانائی اور آمد و رفت کے راستوں میں بہتری آئے گی جبکہ پیداوار میں بھی اضافہ ہوگا ۔س کے لیے ہمیں جدید ٹیکنالوجی میں ترقی کرنا ہوگی ورنہ ہم بڑے فوائد سے محروم رہ سکتے ہیں۔ سی پیک منصوبے سے پورے ملک کے عوام کو فائدہ پہنچے گا۔ ایک اور سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ کراچی میں کبھی کوئی لسانی جھگڑا تھا ہی نہیں، اگر جھگڑے ہوئے بھی تو وہ مصنوعی تھے، ان کا حقیقت سے کوئی تعلق نہیں تھا۔ دراصل کراچی میں لسانیت کی سیاست کی گئی، شہر میں مہاجروں کے بعد بڑی آبادی پختونوں کی ہے ، میں نہیں سمجھتا کہ پختون مہاجروں کا پہلے کبھی کوئی جھگڑا رہا ہے اور نہ ہی آج ہے۔ کراچی کے امن کے حوالے سے پوچھے گئے ایک سوال کے جواب میں ڈاکٹر معراج الہدی نے کہا کہ کراچی میں ماضی کے مقابلے میں امن و امان کی صورت حال کافی بہتر ہے ۔ جہاں تک غیر قانونی اسلحہ کی بات ہے تو آج بھی یہ اسلحہ شہر میں موجود ہے ۔اس کی برآمدگی کے لیے ایک مربوط آپریشن کی ضرورت ہے ۔شہر کو اسلحہ سے پاک کیے بغیر پائیدار امن کا قیام ناممکن ہے ۔ اب یہ اداروں کا کام ہے کہ وہ اسلحہ کی برآمدگی میں غفلت کا مظاہرہ نہ کریں ۔ انہوں نے کہا کہ میں سمجھتا ہوں کہ کرپشن ملک کی بقاء اور سلامتی کیلئے خطرہ بن چکی ہے۔ جماعت اسلامی نے ہمیشہ کرپشن کے خلاف آواز اٹھائی ہے اور آج بھی اس کے خلاف ہیں ، ہماری جماعت کے لوگ قومی و صوبائی اسمبلی اور سینٹ کے ارکان بھی رہے ہیں۔ لیکن کبھی بھی ان پر کرپشن کا الزام نہیں رہا ، ہماری جماعت میں بددیانت آدمی کی جگہ نہیں ہے ، کیونکہ ہمارے ہاں احتساب کا عمل مضبوطی کے ساتھ موجود ہے۔ آئندہ انتخابات کے حوالے سے پوچھے گئے ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ پیپلز پارٹی کیلئے ہمیشہ کی طرح آئندہ عام انتخابات کیک کا ٹکڑا ثابت نہیں ہونگے ، کیونکہ اب اسے کڑے احتساب کا سامنا کرنا ہوگا۔ سندھ کے عوام کو اپنی دس سالہ کارکردگی کے بارے میں جواب دینا ہوگا۔ سندھ میں آئندہ بننے والا اپوزیشن اتحاد ایک مضبوط اتحاد بن کر سامنے آئے گا اور سندھ سمیت ملک بھر کے لوگ نئے سیاسی اتحاد کو خوش آمدید کہیں گے اس حوالے سے ابھی بہت سی باتیں قبل از وقت ہیں ، میں اتنا کہوں گا کہ اب لوگوں میں بہت زیادہ شعور آگیا ہے ، لوگ سوچ سمجھ کر اپنے امیدواروں کو ووٹ دیں گے، انہوں نے ماضی سے بہت کچھ سیکھا ہے، اس وقت پورے سندھ میں تعلیم، صحت، اور پانی جیسی بنیادی سہولیات میسر نہیں ہیں، جو حکمران آتے رہے انہوں نے کبھی بھی عوام کے بنیادی مسائل کی طرف متوجہ نہیں دی، پی پی نے عوام سے ووٹ ضرور لیے ، لیکن لاڑکانہ کی مثال آپ کے سامنے ہے، لاڑکانہ شہر آج بھی کھنڈر بنا ہوا ہے جو بھٹو کے نام سے جانا جاتا ہے۔