کشمیر پاکستان بھارت میں کرکٹ میچ نہیں، تسلیم شدہ تنازع ہے، عبدالرشید

کشمیر پاکستان بھارت میں کرکٹ میچ نہیں، تسلیم شدہ تنازع ہے، عبدالرشید

سری نگر ( مانیٹرنگ ڈیسک / آن لائن) جموں و کشمیر کے ایم ایل اے شیخ عبدالر شید نے بھارتی کرکٹر وریندر سہواگ اور گوتم گمبھیر کے بیان کا منہ توڑ جواب دیتے ہوئے کہا ہے کہ یہ پاکستان اور بھارت کے درمیان کھیلا جانے والا کرکٹ میچ نہیں بلکہ انسانی المیہ اور بین الاقوامی سطح پر تسلیم شدہ تنازع ہے۔ واضح رہے کہ گوتم گمبھیر نے کشمیری نوجوان کے ہاتھوں بھارتی فوجیوں کی درگت کے حوالے سے کہا تھا کہ ہر بھارتی فوجی جوان کے چہرے پر تھپڑ پڑنے کے بدلے کم از کم 100جہادیوں کو شہید کرنا چاہیے۔جو بھی بھارت سے آزادی چاہتا ہے، وہ ملک چھوڑ کر چلاجائے، کشمیر ہمارا ہے۔ شیخ عبدالرشید نے کہا ہے کہ ’’جموں و کشمیر کے بھارت کا لازمی حصہ ہونے کا دعویٰ کرنے اور کشمیریوں کو پاکستان چلے جانے کا کہنے سے پہلے، دونوں کھلاڑیوں کو یہ سمجھنے کی ضرورت ہے کہ جموں و کشمیر بھارت اور پاکستان کے درمیان کھیلا جا رہا انٹرنیشنل میچ نہیں، لیکن یہ ایک انسانی المیہ اور بین الاقوامی سطح پر تسلیم شدہ تنازعہ ہے۔ انہیں سکیورٹی فورسز پر پتھر اور تھپڑ برسائے جانے کی اتنی فکر ہے تو پہلے انہیں نعیم جیسے ابھرتے ہوئے کرکٹرز کے بارے میں بات کرنی چاہئے، جسے کشمیر کا سچن ٹنڈولکر بھی کہا جاتا تھا، مگر اسے گولیوں کے ذریعے بے رحمانہ طریقے سے ہمیشہ کیلئے سکیورٹی فورس نے خاموش کر دیا جن کی سہواگ اور گمبھیر سمیت دیگر تعریف کر رہے ہیں۔ سہواگ، گمبھیر اور دوسروں کو یہ جواب دینے دو کہ دودی پورہ ہندوارا میں طفیل ماتو سمیت کرکٹ کھیلنے والے دیگر دوسرے بچوں کا قتل عام کیوں کیا گیا۔ یہ جانتے ہوئے بھی کہ انہوں نے اپنے ننھے ہاتھوں میں پتھر نہیں بلکہ بلے اور گیند اٹھا رکھے تھے۔ دونوں کرکٹرز کو کشمیر کا دورہ کرنے اور نام نہاد سکیورٹی فورس کا سفاک چہرہ دیکھنے دو جنہوں نے سینکڑوں معصوم بچوں کو اندھا کر دیا اس پر کسی کی توجہ بھی نہیں گئی۔‘‘

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر