ضلع ملتان میں معیار پر پورا اترنے والے سکول رجسٹرڈ، غیر معیاری بند کردئیے جائینگے

ضلع ملتان میں معیار پر پورا اترنے والے سکول رجسٹرڈ، غیر معیاری بند کردئیے ...

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


ملتان( اعجاز مرتضیٰ سے )آر یاپار،ضلع ملتان میں 1612غیر رجسٹرڈ سکولز کے معاملات فائنل کرنے کا فیصلہ کر لیا گیا‘ تحصیل کی سطح پر کمیٹیاں قائم کر دی گئیں‘ معیار پر پورا اترنے والے سکولز رجسٹرڈ کئے جائیں گے جبکہ غیر معیاری سکولز بند کرادئیے جائیں گے‘ تفصیل کے مطابق ضلع ملتان میں اس وقت1612سکولز غیر رجسٹرڈ ہیں ‘ان میں بیشتر سکولز معیار پر پورا نہیں اترتے ‘ ان کے ٹیچنگ سٹاف کی نہ ہی مطلوبہ تعلیمی قابلیت ہے ‘ نہ ہی عمارتیں معیار پرپورا اترتیہیں ‘نہ ہی سکیورٹی کے انتظامات ایس او پیز کے مطابق ہیں ‘ نہ ہی لائبریری اور لیب ہے ‘ گراؤنڈز ہیں نہ پارکنگ کے انتظامات ہیں‘بیشتر سکولز میں انڈر میٹرک ‘ مڈل فیل اور پرائمری پاس’’ معلمات‘‘ خدمات سر انجام دے رہی ہیں جن کو ہزار دوہزار روپے ’’تنخواہ‘‘ پر رکھا گیا ہے ‘مذکورہ سکولز مالکان نہ صرف دنوں میں امیر ترین ہو گئے ہیں اور کروڑوں روپے میں کھیل رہے ہیں بلکہ ان کے ساتھ ملی بھگت کرنے والے محکمہ تعلیم کے افسرو اہلکار بھی دولت سے کھیل رہے ہیں ‘ سیکڑوں سکولز گلی کوچوں میں کھلے ہوئے ہیں اور ان کی معلمات ہی تعلیم سے نا بلد ہیں تو طلباو طالبات کو وہ کیا پڑھائیں گی ‘ اس طرح قوم کے نونہالوں کے مستقبل سے کھیلا جا رہا ہے ‘اس حوالے سے چیف ایجوکیشن ڈسٹرکٹ ایجوکیشن اتھارٹی اعزاز احمد جوئیہ نے فیصلہ کیا ہے کہ معیاری سکولز کی فوری رجسٹریشن کی جائے اور غیر معیاری سکولز بند کر دئیے جائیں ‘ انہوں نے اس سلسلے میں تحصیل سطح پر کمیٹیاں قائم کی ہیں جن میں اچھی شہرت کے حامل اساتذہ اور پرائیویٹ سکولز کے نمائندے بھی شامل ہو نگے ‘ یہ کمیٹیاں اپنی تحصیل کی حدود میں تمام غیر رجسٹرڈ پرائیویٹ سکولز سے رجسٹریشن کے لئے درخواستیں طلب کرکے پراسیس کریں گی ‘ سکولز کا معائنہ کیا جائے گا ‘ حکومت کے معیار پر پورا اترنے والے سکولز کی فوری رجسٹریشن کر دی جائے گی جبکہ حکومتی شرائط کو پورا نہ کرنے والے سکولز کی رجسٹریشن کی درخواستوں پر اعتراض لگایا جائے گا اور ان کے خلاف کارروائی کی جائے گی‘ واضح رہے کہ صوبہ پنجاب میں سکولز کی رجسٹریشن کے لئے ضلع ملتان میں یہ پہلا منصوبہ ہے جو سی ای او اعزاز احمد جوئیہ نے بنایا ہے ‘ اس سے قبل ڈسٹرکٹ ایجوکیشن آفیسر سیکنڈری کی سربراہی میں کمیٹی نجی سکولز کی رجسٹریشن کے معاملات نمٹاتی تھی ۔