امریکا پاک بھارت کشیدگی کے خاتمے میں کردار ادا کر سکتا ہے : ملیحہ لودھی

امریکا پاک بھارت کشیدگی کے خاتمے میں کردار ادا کر سکتا ہے : ملیحہ لودھی
امریکا پاک بھارت کشیدگی کے خاتمے میں کردار ادا کر سکتا ہے : ملیحہ لودھی

  

اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن )اقوام متحدہ میں پاکستانی مندوب ڈاکٹر ملیحہ لودھی نے کہا ہے کہ مقبوضہ کشمیر کی صورت حال بڑی سنگین ہے اور اس سے علاقائی سلامتی کو خطرات لاحق ہیں۔” امریکا اس پوزیشن میں ہے کہ وہ پاکستان اور بھارت کے درمیان کشیدگی کے خاتمے میں کردار ادا کرسکتا ہے“۔

واشنگٹن میں تھنک ٹینک ورلڈ افیئرز کونسل کو انٹرویو میں انکا کہنا تھا کہ امریکا کو ایک متوازن کردار ادا کرنا ہوگا۔ ماضی میں امریکا کی غیر متوازن پالیسی کی وجہ سے پاک امریکا تعلقات میں بگاڑ آیا۔

پاکستان اور بھارت کے درمیان کشیدگی کے حوالے سے ملیحہ لودھی کا کہنا تھا کہ امریکا اس وقت اس پوزیشن میں ہے کہ دونوں پڑوسی ممالک کے درمیان کشمیر تنازعے کی وجہ سے بڑھی کشیدگی کے خاتمے میں اپنا کردار ادا کرسکتا ہے۔ تاہم اس کے لیے امریکا کو ایک متوازن کردار ادا کرنا ہوگا۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان سمجھتا ہے کہ امریکا نے ماضی میں جنوبی ایشیا میں تعلقات میں توازن برقرار نہیں رکھا۔ جس کی واضح مثال بش انتظامیہ کی جانب سے بھارت کے ساتھ کیا جانے والا سول نیوکلیئر معاہدہ ہے جو خطے کے لیے امتیازی نیوکلیئر پالیسی ہے، جس کے نتائج نظر آرہے ہیں۔

ملیحہ لودھی کا کہنا تھا کہ کشمیر کی صورت حال بڑی سنگین ہے، اس سے علاقائی سلامتی کو خطرات لاحق ہیں۔ پاکستان چاہتا ہے کہ امریکا صرف دونوں ممالک کے درمیان لگی آگ کو بجھانے کے لیے آگے نہ آئے بلکہ اپنا کردار ادا کرتے ہوئے کسی بھی قسم کے تنازعے کو بھڑکنے سے بھی روکے، رہنمائی کا یہ کردار امریکا ادا کرسکتا ہے۔

ملیحہ لودھی نے کہا کہ ہمیں افغانستان میں قیام امن کے لیے مذاکرات کرنا ہوں گے۔ اقوام متحدہ سمیت عالمی برادری کا بھی یہی مطالبہ ہے۔ امریکا اس بارے میں اپنے تعاون کا یقین دلاچکا ہے لیکن صرف یہی بات کافی نہیں ہے ، اسے یہ مقاصد حاصل کرنے کے لیے سرگرمی دکھانا ہوگی۔

مزید : قومی /اہم خبریں