”نورین کی تین ہندو سہلیاں تھیں ،فرار ہونے سے پہلے وہ یونیورسٹی آئی اور ۔۔۔“نورین لغاری کی یونیورسٹی کے وائس چانسلر نے ایسا انکشاف کردیا کہ ہر کوئی ہکا بکا ر ہ گیا

”نورین کی تین ہندو سہلیاں تھیں ،فرار ہونے سے پہلے وہ یونیورسٹی آئی اور ...
”نورین کی تین ہندو سہلیاں تھیں ،فرار ہونے سے پہلے وہ یونیورسٹی آئی اور ۔۔۔“نورین لغاری کی یونیورسٹی کے وائس چانسلر نے ایسا انکشاف کردیا کہ ہر کوئی ہکا بکا ر ہ گیا

  


حیدر آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن)لیاقت میڈ یکل یونیورسٹی کے وائس چانسلر نوشاد شیخ نے بتا یا ہے کہ جس دن نورین لغاری فرار ہوئیں ،اس دن وہ بس پر یونیورسٹی پہنچی اور کلاس میں بھی آئی لیکن پھر وہ یونیورسٹی سے فرار ہو گئی ۔ان کا کہنا تھا کہ ہمیں اطلاع ملی کہ نورین بس میں بیٹھ کر لاہور چلی گئی ،ہم نے ایجنسیوں کو رپورٹ کر رکھی تھی کہ نورین لاپتہ ہے ۔

حساس ادارے کے افسر نے نورین لغاری کے والد کواس کی انتہا پسندانہ پوسٹ سے متعلق آگاہ کر دیا تھا : تفتیش میں انکشاف

حیدر آباد میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے نوشاد شیخ نے کہا کہ نورین اسلامی رجحان رکھنے والی بچی تھی ،وہ بہت سادہ تھی اور الگ تھلگ رہتی تھی ،نورین کی پانچ سہلیاں بھی تھیں جن میں سے دو مسلمان جبکہ 3ہندو برادری سے تعلق رکھتی تھیں ۔انہوں بتا یا کہ نورین لغاری پڑھائی میں بھی اچھی تھی اور اس کے نتائج بھی ٹھیک رہے ۔انہوں نے کہا کہ یونیورسٹی میں زیر تعلیم اور بھی لڑکیاں نورین لغاری کی طرح مذہبی خیالات رکھتی ہیں ،یونیورسٹی کی 50فیصد طالبات نقاب پہنتی ہیں ،ہم کبھی نہیں چاہیں گے کہ کوئی بچہ انتہا پسندی کی طرف چلا جائے۔ان کا کہنا تھا کہ ممکن ہے نورین لغاری سوشل میڈ یا پر کسی سے رابطے میں رہی ہو ،نورین کسی کارروائی میں شریک ہوئی تو یونیورسٹی کا تعلق نہیں ۔

مزید : حیدرآباد