ابوظہبی میں مردوں کے مساج سینٹر میں کام کرنے والی خاتون کو گرفتار کر لیا گیا

ابوظہبی میں مردوں کے مساج سینٹر میں کام کرنے والی خاتون کو گرفتار کر لیا گیا
ابوظہبی میں مردوں کے مساج سینٹر میں کام کرنے والی خاتون کو گرفتار کر لیا گیا

  

ابو ظہبی(ڈیلی پاکستان آ ن لائن )ابو ظہبی میں واقع مردوں کیلئے مساج سینٹر میں کام کرنے والی خاتون کو گرفتار کر لیاگیاہے،جس پر عدالت میں ابتدائی طور پر جسم فروشی کا الزام عائد کیا گیاہے ۔

تفصیلات کے مطابق میونسپلٹی آفیسرکی جانب سے 7اپریل کو ابوظہبی میں واقع مردوں کے مساج سینٹر کا دورہ کیا گیا جس دوران انکشاف ہوا کہ مردوں کے مساج سینٹر میں 27سالہ بنگلہ دیشی خاتون نوکری کر رہی ہے جس پر اسے گرفتار کر لیا گیاہے ۔اسسنٹ انسپکٹر کا کہناتھا کہ اس کی ذمہ داری ہے کہ وہ ریاست کی مختلف دکانوں میں جا کر چیک کرے کہ قانون کی خلاف تو کوئی کام نہیں ہور ہا۔اس کا کہنا تھا کہ میرے انڈر آنے والے علاقے میں ایک مردوں کا مساج سینٹر بھی شامل ہے اور جب میں اس کے اندر گیا تو میں نے وہاں پر بہت سے چینی اور بھارتی افراد کو دیکھا ۔جب میں نے اپنی سرکاری پہنچان نکال کر دکھائی تو تمام کے تمام رفو چکر ہو گئے اور میں نے معلوم کیا وہاں پر بہت سارے کمرے تھے جن میں سے چار کمروں میں خواتین تھیں ،میں نے فوری اسی وقت پولیس کو کال کرکے بلا لیا ،وہاں پر موجود خواتین اپنی پہنچان ظاہر کرنے میں ناکام رہیں کیونکہ ان کے پاس کوئی دستاویزات نہیں ہیں ۔

گرفتار ہونے والی خاتون کا کہناتھا کہ وہ ریاست میں اپنی ایک ہم وطن خاتون کی مدد سے ویزٹ ویزہ پر آئی تھی جوکہ عجمان میں رہتی ہیں ،وہ گھر میں کام کرتی تھی لیکن بعد میں اس نے مجھے جسم فروشی کے کاروبار میں زبردستی ڈال دیا ۔خاتون کا کہناتھا کہ اسے زبردستی مردوں کے ساتھ تعلقات قائم کرنے پڑتے تھے جبکہ اس کے عوض اسے کوئی رقم بھی نہیں دی جاتی تھی ۔خاتون کا کہناتھا کہ میں وہاں سے کسی طرح فرار ہونے میں کامیاب ہو گئی اور یہاں ابو ظہبی میں آ گئی ۔خاتون کا کہناتھا کہ وہ یہاں جسم فروشی نہیں کرتی تھی ۔

مزید : عرب دنیا