وزیر خزانہ سے ملاقات میں 6 گزارشات رکھیں،سینیٹ اختیارات میں اضافے پرمذاکرات کا آغاز کرنے پراتفاق ہوا:رضا ربانی

وزیر خزانہ سے ملاقات میں 6 گزارشات رکھیں،سینیٹ اختیارات میں اضافے پرمذاکرات ...
وزیر خزانہ سے ملاقات میں 6 گزارشات رکھیں،سینیٹ اختیارات میں اضافے پرمذاکرات کا آغاز کرنے پراتفاق ہوا:رضا ربانی

  

اسلا م آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)چیئرمین سینیٹ رضاربانی نے کہا ہے کہ میں نے وزیرخزانہ سے ملاقات میں 6گزارشات رکھیں تھیں جبکہ سینیٹ اختیارات میں اضافے پرمذاکرات کا آغاز کرنے پراتفاق ہو۔

تفصیلات کے مطابق چیئرمین سینیٹ رضاربانی کا میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہنا تھا کہ میں چاہتا ہوں جمعہ کے روزجو واقعات رونماہوئے ان پرآپ کواعتماد میں لوں اس روز جو ہوا اچانک نہیں ہوا،:مجھے اس حوالے سے نہ کوئی دورہ پڑااورنہ ہی ڈراما بنانے کی کوشش کی تھی ، میرا موقف تب بھی یہی تھاجب میں اپوزیشن یا پھرحکومتی بنچزپربیٹھتاتھااور میرا موقف یہی رہا ہے کہ حکومت وقت پارلیمنٹ کو سنجیدگی سے لے۔انہوں نے کہا کہ ہم نے مشرف دورمیں پارلیمنٹ ہاؤس کے باہردھرنادیاتھااوربطورچیئرمین اپنی پہلی تقریرمیں کہاتھاایوان اورممبران کے وقارکاتحفظ کروں گا، میرے اقدام کا تعلق کسی سیاسی ڈرامے سے نہیں تھا،میرا اقدام ایوان کی عزت اور حق کے دفاع سے متعلق تھا۔

آرمی چیف سے درخواست کر کے ملاقات کی جو ایک گھنٹہ جاری رہی :عمران خان

رضا ربانی کا کہنا تھا کہ میں نے وزیرخزانہ سے ملاقات میں 6گزارشات سامنے رکھیں کہ آئندہ وزرا کو تنبیہ کی جائیگی کہ وہ پارلیمان کی کارروائی کو فوقیت دیں، وزیر اعظم سیکریٹریٹ سے اس حوالے سے تحریری سرکلر جاری ہوگا، سوالوں کے جوابات نہ آنے پرحکومت معاملے کواٹھائیگی۔سینیٹ کے 8 بل قومی اسمبلی کے پاس متروک ہیں اور پارلیمانی کمیٹی کے نوٹس میں اب سینیٹ کو بھی ان بورڈ رکھاجائیگا جبکہ مجھے وزرا کی عدم حاضری پر وزیراعظم کی جانب سے یقین دہانی کرائی گئی۔انہوں نے مزید کہا کہ سینیٹ اختیارات میں اضافے پرمذاکرات کا آغاز کرنے پراتفاق ہوا، میں اس معاملے میں مجھ سے تعاون کرنے پر آصف زرادری،عمران خان،مولانافضل الرحمان،اسفندیارولی کا شکرگزارہوں کیونکہ ان رہنماوں نے اپنی جماعتوں کے پارلیمانی لیڈرز کے ذریعے تعاون کا یقین دلایا ۔

مزید : اسلام آباد