جہاز میں بیٹھتے ہی دولہا دلہن غلطی سے ایسی حرکت کر بیٹھے کہ ائیرلائن نے ساتھ لیجانے سے ہی انکار کردیا، جہاز سے اتاردیا، آخر ایسا کیا کیا تھا؟ حقیقت سامنے آنے پر سوشل میڈیا پر ہنگامہ برپاہوگیا

جہاز میں بیٹھتے ہی دولہا دلہن غلطی سے ایسی حرکت کر بیٹھے کہ ائیرلائن نے ساتھ ...
جہاز میں بیٹھتے ہی دولہا دلہن غلطی سے ایسی حرکت کر بیٹھے کہ ائیرلائن نے ساتھ لیجانے سے ہی انکار کردیا، جہاز سے اتاردیا، آخر ایسا کیا کیا تھا؟ حقیقت سامنے آنے پر سوشل میڈیا پر ہنگامہ برپاہوگیا

  


نیویارک(مانیٹرنگ ڈیسک) امریکی فضائی کمپنی یونائیٹڈ ایئرلائنز کو گزشتہ دنوں اس وقت عالمی سطح پر تنقید کا نشانہ بنایا گیا جب اس کی ایک پرواز میں عملے نے ایک مسافر کو گھسیٹتے ہوئے جہاز سے نیچے اتاردیا۔ اس واقعے کے ایک ہفتے بعد ہی کمپنی کو ایک بار پھر شدید تنقید کا نشانہ بنایا جا رہا ہے۔ اس بار اس کی ایک پرواز میں موجود دولہا دلہن کو ہتک آمیز سلوک کے بعد نیچے اتار دیا گیا ہے۔ میل آن لائن کی رپورٹ کے مطابق امریکی ریاست یوتاہ کے شہر سالٹ لیک سٹی کا رہائشی مائیکل اول اور اس کی منگیتر امبر میکس ویل اپنی شادی کے لیے وسطی امریکہ کے ملک کوسٹاریکا جا رہے تھے۔

سالٹ لیک سٹی میں جب مائیکل اور امبر جہاز میں سوار ہوئے تو انہوں نے دیکھا کہ ان کی ایک سیٹ پر کوئی اور مسافر سو رہا تھا، چنانچہ وہ اس مسافر کو جگانے کی بجائے اسی کلاس میں خالی پڑی سیٹوں پر جا کر بیٹھ گئے۔ کچھ دیر بعد عملے کا ایک رکن ان کے پاس آیا اور پوچھا کہ کیا وہ انہی سیٹوں پر بیٹھے ہیں جو انہوں نے بک کروائی تھیں؟ جواب ’نہیں‘ ملنے پرانہیں سیٹیں خالی کرنے اور ٹیکساس میں پرواز کے اگلے سٹاپ پر طیارے سے اتر جانے کا حکم دے دیا گیا۔

جہاز کے ٹیک آف سے چند لمحے پہلے ایک مسافر کو موبائل پر پیغام موصول جسے دیکھتے ہی پائلٹ نے جہاز واپس موڑ دیا، اس میں کیا لکھا تھا؟ کوئی دھمکی نہ تھی بلکہ۔۔۔ سچ جان کر پوری دنیا پائلٹ کو داد دینے پر مجبور ہوگئی

جب پرواز ٹیکساس پہنچی تو عملے نے واقعی انہیں زبردستی پرواز سے اتار دیا۔ عملے نے الزام لگایا کہ وہ اضافی رقم ادا کیے بغیر مہنگی کلاس کی سیٹوں پر چلے گئے تھے لیکن مائیکل کا کہنا ہے کہ ہم اکانومی کلاس میں اپنی سیٹوں سے چند قطاریں چھوڑ کر آگے بیٹھے تھے۔پرواز کے عملے نے ہمارے ساتھ انتہائی نامناسب سلوک کیا۔“ یونائیٹڈ ایئرلائنز کا یہ نیا کارنامہ سامنے آنے پر سوشل میڈیا پر اسے ایک بار پھر شدید تنقید کا نشانہ بنایا جا رہا ہے۔

مزید : ڈیلی بائیٹس