’میں 3 ماہ تک مسلسل زمین کھودتی رہی، بالآخر 60 فٹ کھودنے کے بعد ایسی چیز مل گئی کہ پورے علاقے کی زندگی ہی بدل گئی کیونکہ۔۔۔‘ 51 سالہ عورت نے تن تنہا ایسا کام کر ڈالا کہ پوری دنیا ہمت کی داد دینے پر مجبور ہوگئی

’میں 3 ماہ تک مسلسل زمین کھودتی رہی، بالآخر 60 فٹ کھودنے کے بعد ایسی چیز مل گئی ...
’میں 3 ماہ تک مسلسل زمین کھودتی رہی، بالآخر 60 فٹ کھودنے کے بعد ایسی چیز مل گئی کہ پورے علاقے کی زندگی ہی بدل گئی کیونکہ۔۔۔‘ 51 سالہ عورت نے تن تنہا ایسا کام کر ڈالا کہ پوری دنیا ہمت کی داد دینے پر مجبور ہوگئی

  


نئی دہلی(مانیٹرنگ ڈیسک)معروف کہاوت ہے کہ ”ہمتِ مرداں، مددِ خدا“ یہ کہاوت بھارتی ریاست اترکھنڈ کی اس بہادر خاتون پر صادق آتی ہے جس نے تن تنہاءانتہائی مشقت کرکے پورے علاقے کی قسمت بدل دی ہے۔ ٹائمز آف انڈیا کی رپورٹ کے مطابق ریاست اترکھنڈ کا گاﺅں گنیش نگر پانی کی شدید کمی کا شکار تھا چنانچہ 51سالہ گوری ایس نائیک نامی اس دلیر خاتون نے مدد کے لیے حکومت کی طرف دیکھنے کی بجائے اپنی مدد آپ کے تحت اپنے گھر کے پاس ایک کنواں کھودنا شروع کر دیا اورتنہاء3مہینے کی کڑی مشقت سے 60فٹ گہرا کنواں کھود کر پانی تک پہنچنے میں کامیاب ہو گئی۔

’میں نے اپنی شادی منسوخ کردی اور شادی کا جوڑا انٹرنیٹ پر بیچ رہی ہوں کیونکہ میرے شوہر نے یہ شرمناک کام کردیا ہے‘ دلہن نے ایسی بات کہہ دی کہ سوشل میڈیا پر ہنگامہ برپاہوگیا

رپورٹ کے مطابق گوری روزانہ اکیلے5سے 6گھنٹے کھدائی کا کام کرتی تھی۔ جب کنواں انتہائی گہرا ہو گیا اور آخری مراحل میں تھا تب آخری چند روز گاﺅں کی دیگرتین خواتین نے مٹی اوپر کھینچنے میں اس کی مدد کی۔ اب اس 60فٹ گہرے کنویں میں 7فٹ تک پانی موجود ہے جس سے وہ اپنے ناریل اور چھالیے کے درختوں کو سیراب کررہی ہے اور گاﺅں کے لوگ بھی اس سے استفادہ کر رہے ہیں۔ گوری ایک بچے کی ماں ہے اور محنت مزدوری کرتی ہے لیکن اس نے اپنے گھر کی خالی زمین پر چھالیے کے 150اور ناریل کے 15اور کیلے کے کچھ درخت بھی اگا رکھے ہیں۔

مزید : ڈیلی بائیٹس