پی ٹی آئی کا انتخابی مہم کے دوران لاہور کا بلدیاتی نظام معطل کرانے کیلئے عدالت جانے پر غور

پی ٹی آئی کا انتخابی مہم کے دوران لاہور کا بلدیاتی نظام معطل کرانے کیلئے ...

لاہور(دیبا مرزا سے) پاکستان تحریک انصاف نے عام انتخابات کی مہم کے دوران لاہور کا بلدیاتی نظام معطل کرانے کے لئے عدالت سے رجوع کرنے پر غور شروع کردیا ہے جس کا مقصد مبینہ طور پر حکمران مسلم لیگ (ن) کی جانب سے اپنے بلدیاتی چیئرمینوں کے ذریعے جاری مختلف ترقیاتی کام رکوانا ہے، اس وقت لاہور بھر کے 274چیئرمینوں میں سے 260کے قریب مسلم لیگ ن کے ہیں پی ٹی آئی کو یہ خدشہ لاحق ہے کہ اگر بلدیاتی نظام اسی طرح سے کام کرتا رہا تو پھر مسلم لیگ ن کے یہ چیئرمین اسی طرح سے عوام کے ترقیاتی کام کرتے رہیں گے اور عوام کی ہمدردیاں مسلم لیگ ن کی طرف ہوں گی ۔اسی لئے پی ٹی آئی اس بلدیاتی نظام کوانتخابات کے انعقاد تک عدالت سے ’’فریز‘‘ کرانے پر سنجیدگی سے غور کررہی ہے۔پی ٹی آئی لاہورکے چیئرمینوں کے ذرائع نے ’’ پاکستان‘‘ کو بتایا کہ پی ٹی آئی بلدیاتی نظام کی مخالف نہیں لیکن ہم چاہتے ہیں کہ جب الیکشن کا اعلان ہو جائے اور جب انتخابی مہم شروع ہو جائے تو الیکشن کے انعقاد تک بلدیاتی چیئرمینوں کو مکمل طور پر معطل کردیا جائےْ ان کے پاس اس دوران کسی بھی قسم کا کوئی اختیار نہیں ہو نا چاہئے ان کے زیر سایہ کام کرنے والے یونین کونسلوں کے سیکریٹریوں کو بھی واپس محکمہ بلدیات واپس بھیج دیا جائے جب الیکشن کا مرحلہ مکمل ہو جائے تو دو بارہ اس نظام کو اسی طرح سے بحال کردیا جائے ۔پی ٹی آئی چیئرمینوں کے ذرائع کے مطابق ہم مذکورہ نکات اپنی رٹ میں اٹھائیں گے اور اسی کی روشنی میں معزز عدلیہ سے استدعا کریں گے کہ وہ انتخابی مہم اور الیکشن کے مکمل نتائج آنے تک اس بلدیاتی نظام کو وقتی طور پر معطل کرنے کے احکامات الیکشن کمیشن کو دے ۔پی ٹی آئی کے ذرائع کے مطابق اس رٹ کوحکومت کی آئینی مدت کے پورا ہوتے ہی عدالت میں دائر کئے جانے کاامکان ہے تاہم پی ٹی آئی نے اندرون خانہ اس رٹ کی تیاری پر کام شروع کردیا ہے عمران خان کی حتمی منظوری کے بعد اس رٹ کو پی ٹی آئی کی لیگل ٹیم عدالت میں دائر کردے گی۔

پی ٹی آئی

مزید : صفحہ آخر