کرم ایجنسی میں افغان سرحد پر فائرنگ کا سلسلہ بند

کرم ایجنسی میں افغان سرحد پر فائرنگ کا سلسلہ بند

پاراچنار (نمائندہ پاکستان)کرم ایجنسی میں افغان سرحد پر فائرنگ کا سلسلہ بند ہو گیا ہے افغانستان سے حملے میں شہید ہونے والوں کی تعداد پانچ ہوگئی ہے جبکہ بارہ اہلکار زخمی ہوگئے ہیں فورسز کی جوابی کاروائی میں دس حملہ اور مارے گئے ہیں کرم ایجنسی میں لوئر کرم کے علاقہ لکہ تیگہ سے ملحقہ افغان سرحد پر گزشتہ روز افغانستان کے صوبہ خوست سے حملہ آوروں نے حملہ کیا تھا جس کے بعد فورسز کے تازہ دم دستوں کے ساتھ ساتھ ہزاروں کی تعداد میں مسلح قبائل سرحد کی حفاظت کے لئے افغان سرحد پر پہنچ گئے ایم این اے ساجد طوری کے مطابق حملے میں فورسز کے پانچ اہلکار شہید اور بارہ زخمی ہوگئے ہیں فورسز اور مسلح قبائل کی جانب سے جوابی کاروائی کے بعد حملہ آوروں کا حملہ پسپا کر دیا گیا فورسز اور قبائل کی جوابی کاروائی میں دس حملہ آور ہلاک ہوگئے جبکہ متعدد زخمی ہوگئے فورسز نے مسلح قبائل کو سرحد سے واپس روانہ کردیا جبکہ قبائلی عمائدین ، ایم این اے ساجد طوری اور پولیٹیکل ایجنٹ بصیر خان وزیر اور انتظامیہ کے دیگر اہلکاروں کے ہمراہ سرحد پر پہنچ گئے اور کرم ایجنسی کے مالی خیل اور افغانستان کے قبائل کے مابین جرگے کے بعد پانچ شہید سیکورٹی اہلکاروں کی جسد خاکی بھی پولیٹیکل انتظامیہ کے حوالے کردی گئی جس کے بعد شہدا کی میتیں اپنے آبائی علاقوں میں روانہ کردی گئیں حکام کا کہنا ہے کہ جب تک افغان سرحد پر باڑ لگانے کا کام مکمل نہیں کیا جاتا اس قسم کے ناخوشگوار واقعات کا خدشہ ہیں اس لئے جلد بارڈر پر باڑ لگانے کی کوشش کی جارہی ہے

مزید : پشاورصفحہ آخر

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...