طیبہ تشدد کیس ،ایڈیشنل سیشن جج اور ان کی اہلیہ کی درخواست ضمانت منظور

طیبہ تشدد کیس ،ایڈیشنل سیشن جج اور ان کی اہلیہ کی درخواست ضمانت منظور
طیبہ تشدد کیس ،ایڈیشنل سیشن جج اور ان کی اہلیہ کی درخواست ضمانت منظور

اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن) اسلام آباد ہائیکورٹ نے طیبہ تشدد کیس میں ایڈیشنل سیشن جج راجہ خرم علی خان اور ان کی اہلیہ ماہین کی درخواست ضمانت منظورکر لی ہے۔عدالت کی جانب سے خرم علی خان اور ان کی اہلیہ کو پچاس ،پچاس ہزار کے مچلقے جمع کروانے کی ہدایات دی گئی ہیں۔

یاد رہے کہ ہائیکورٹ نے آج (منگل )ہی طیبہ تشدد کیس کے ملزمان سابق سیشن جج راجا خرم علی خان اور ان کی اہلیہ ماہین ظفر کو ایک ایک سال قید اور 50، 50 ہزار روپے جرمانے کی سزا سائی تھی ۔

تفصیلات کے مطابق ایڈیشنل سیشن جج راجہ خرم علی خان نے سزا کے بعد اسلام آباد ہائی کورٹ میں درخواست ضمانت دائرکی۔ عدالت نے درخواست ضمانت منظورکر لی ہے ۔ کیس کی سماعت اسلام آبادہائیکورٹ کے جسٹس عامرفاروق نے کی ۔درخواست ضمانت پر سماعت آج دن ایک بجے کی گئی۔

درخواست میں لکھا گیا کہ اپیل دائر کرنا ہمارابنیادی حق ہے۔ سزاکےخلاف سپریم کورٹ میں اپیل دائرکریں گے،ضمانت دی جائے۔سزاپانےوالے ایڈیشنل سیشن جج گرفتاری کے بعدعدالت میں موجودہیں جبکہ ان کی اہلیہ کو پولیس چوکی منتقل کردیا گیاہے۔

واضح رہے کہ ہائیکورٹ کی جانب سے 10 سالہ بچی پر تشدد کرنے والے سابق سیشن جج راجا خرم علی خان اور ان کی اہلیہ ماہین ظفر کو ایک ایک سال قید کی سزا سنادی گئی ہے۔ ملزمان کو50، 50 ہزار روپے جرمانہ بھی کیا گیا ہے۔

مزید : قومی

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...