A PHP Error was encountered

Severity: Notice

Message: Undefined offset: 0

Filename: frontend_ver3/Sanitization.php

Line Number: 1246

Error

A PHP Error was encountered

Severity: Notice

Message: Undefined offset: 2

Filename: frontend_ver3/Sanitization.php

Line Number: 1246

پاکستانی کسانوں کے لئے سب سے بڑی خوشخبری ۔یہ کام کریں ،آپ کے جانور کبھی لنگڑے نہیں ہوں گے

پاکستانی کسانوں کے لئے سب سے بڑی خوشخبری ۔یہ کام کریں ،آپ کے جانور کبھی لنگڑے نہیں ہوں گے

Apr 17, 2018 | 16:39:PM

لاہور(زرعی رپورٹر)’’انسانوں کی طرح جانور بھی جب معذورہوجاتے ہیں تو ان کی صحت گر جاتی ہے۔پاکستان میں جانوروں کی صحت کا خیال بہت کم رکھا جاتا ہے حالانکہ اب ایگرو اینڈ لائیوسٹاک ٹیکنالوجی میں کافی ترقی ہوچکی ہے ۔ان حالات میں کسانوں کوجانوروں کی نگہداشت کا خصوصی خیال رکھ کر ان سے زیادہ فائدہ اٹھانا چاہئے ‘‘ان خیالات کا اظہار ماہر ویٹرنری ڈاکٹر ابرار اختر نے کیا۔

یوٹیوب چینل سبسکرائب کرنے کیلئے یہاں کلک کریں

انہوں نے بتایا کہ یہاں خصوصی جانوروں مثلاًگائیوں میں اکثر لنگڑے پن کا مسئلہ دیکھنے میں آتا ہے اور اس کی وجہ سے جانور کھانا پینا کم کر دیتا ہے اور دودھ میں بھی کمی آ جاتی ہے۔ اس کی بہت سی وجوہات ہیں جیسا کہ اندرونی چوٹ۔ منڈی میں لاتے یا لے جاتے وقت گر جانے سے چوٹ لگ جاتی ہے ،معمولی فریکچر وقت کے ساتھ اور آرام کرنے سے ٹھیک ہو جاتے ہیں دوسری وجہ ارتھرائیٹس ہے جس میں جانوروں کے کو لہے کے جوڑ یا پچھلے جوڑسوج جاتے ہیں ۔ایسا زیادہ عمر کی گائیوں میں موسم سرما میں دیکھنے میں آتا ہے۔اس کا مکمل علاج ممکن نہیں لیکن دافع درد اور سوجن دور کرنے والی ادویات سے جانور کو کچھ آرام ملتا ہے۔

تیسری وجہ ایڑی کے زخم ہیں جوجانور کے کھر چربی کی ایک تہ اور ریشوں والے عضلات سے مل کر بنتے ہیں جن کر گرد ایک نرم تہ ہوتی ہے جو کشن کا کام کرتی ہے۔کیچڑ میں موجود بعض مادے اس تہ کو کسی جگہ سے گلا دیتے ہیں جہاں سے جراثیم اندر داخل ہو کر انفیکشن کا باعث بنتے ہیں ۔اس سے پیدا ہونے والی پیپ سارے کھرمیں پھیل جاتی ہے۔ اس لئے باقاعدہ علاج کرانا چاہئی انہوں نے بتایا کہ چرائی کے دوران پتھروں پر چلنے سے بھی بعض کھروں کے ناخنوں کے درمیان کنکر کانٹے یا لکڑی پھنس جانے سے زخم بن جاتے ہیں اور انفکشن شروع ہوجاتی ہے اس کے لئے جراثیم کش ادویہ سے دھونا اور اینٹی بایوٹک کا استعمال ضروری ہے۔

ڈاکٹر ابرار اختر نے بتایا کہ خوراک کی وجہ سے بھی بعض اوقات بغیر کسی بیرونی وجہ کے پاؤں دکھنا شروع ہو جاتے ہیں۔ اگر جانور کو زیادہ پروٹین اور کم فائبر والی خوراک دی جائے تو اس کے اندر تیزابیت بڑھ جاتی ہے جس کی وجہ سے ایسے مادے پیدا ہوتے ہیں جو خون کی انتہائی باریک نالیوں سے خون کے رسنے کا سبب بنتے ہیں اور جانور کو چلتے وقت تکلیف ہوتی ہے اور پاؤں میں زخم بن جاتے ہیں۔ ایسے میں خوراک میں بھوسہ مناسب مقدار میں شامل کرنا چاہئے اور سائلیج بھی 20 فیصد سے زیادہ نہیں کھلانا چاہئے۔ ایسے معذور جانوروں کے لئے میٹھا سوڈا بھی خوراک میں شامل کرنادینا چاہئے۔انہوں نے انکشاف کیا کہ منرل کی کمی بھی جانوروں کو بیمار کردیتی ہے ۔جب ایسی صورت حال پیدا ہوجائے تو ویٹرنری ڈاکٹروں سے لازمی رابطہ کرنا چاہئے ۔

مزیدخبریں