سینیٹ کمیٹی کی پشتون تحفظ موومنٹ کے تحفظات دور کرنے کی یقین دہانی

سینیٹ کمیٹی کی پشتون تحفظ موومنٹ کے تحفظات دور کرنے کی یقین دہانی

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک) پشتون تحفظ موومنٹ (پی ٹی ایم) کے معاملے پر سینیٹ کمیٹی کے اجلاس میں کمیٹی کنوینر بیرسٹر سیف نے منظور پشتین کو تحفظات دور کرنے کی یقین دہانی کرائی ہے۔پی ٹی ایم کے معاملے پر سینیٹ کی خصوصی کمیٹی کا ان کیمرا اجلاس ہوا جس میں پی ٹی ایم کے سربراہ منظور پشتین، رکن قومی اسمبلی محسن داوڑ سمیت پی ٹی ایم کے دیگر رہنماؤں نے شرکت کی۔ذرائع کے مطابق پی ٹی ایم کے سربراہ منظور پشتین نے کمیٹی کو تحفظات سے آگاہ کیا، کمیٹی کے کنوینر بیرسٹر سیف نے پی ٹی ایم کے تحفظات دور کرنے کی یقین دہانی کرائی۔اجلاس کے حوالے سے سینیٹ سیکریٹریٹ کی جانب سے باضابطہ اعلامیہ بھی جاری کیا گیا جس میں کہا گیا کہ یہ پارلیمان اور پی ٹی ایم کے درمیان پہلا باضابطہ رابطہ ہے۔اعلامیے کے مطابق کمیٹی کے کنوینر بیرسٹر سیف نے اجلاس میں کہا کہ پی ٹی ایم کے تحفظات دور کرنے کی بھرپور کوششیں کی جائیں گی، خصوصی کمیٹی کا قیام قومی یکجہتی اور ہم آہنگی کو فروغ دینے کا تاریخی اقدام ہے۔سینیٹ سیکریٹریٹ کے مطابق کمیٹی کا اجلاس تین گھنٹے تک جاری رہا جس میں اراکین کمیٹی اور پی ٹی ایم قیادت نے کھل کر اپنا نقطہ نظر پیش کیا۔اس موقع پر بیرسٹر سیف نے کہا کہ طبقاتی محرومیوں کا ازالہ آئین اور قانون کے تحت ممکن ہے، مشاورت کے ساتھ آگے بڑھیں گے، قابل عمل سفارشات سے شکایات کا ازالہ کریں گے، جرگہ کلچر ایسی روایت ہے جہاں گفت و شنید اور مذاکرات کے ذریعے مسائل کا حل نکالا جاتا ہے۔انہوں نے مزید کہا کہ پی ٹی ایم کی شکایات کا ازالہ کرنے کیلئے قابل عمل سفارشات مرتب کی جائیں گی، ملک ہم سب کا ہے تاہم حکومت سے گلے شکوے ہوتے ہیں، خطے میں سیکیورٹی مسائل کا سامنا ہے، ہمارے اکثر علاقے اس سے متاثر ہوئے ہیں۔اجلاس میں شریک پی ٹی ایم کے سربراہ منظور پشتین نے مطالبہ کیا کہ قبائلی علاقوں کے لاپتہ افراد کی بازیابی اور وہاں موجود بارودی سرنگوں کو ہٹانے کیلئے اقدامات کیے جائیں۔

پی ٹی ایم

مزید : صفحہ آخر