سکھ یاتریوں کا ننکانہ صاحب آمد بھر پور استقبال ، گوردوارہ میں حاضری ، پاکستان کی خوشحالی ترقی کیلئے دعائیں

سکھ یاتریوں کا ننکانہ صاحب آمد بھر پور استقبال ، گوردوارہ میں حاضری ، ...

  

لاہور،ننکانہ صاحب(فلم رپورٹر،نمائندہ خصوصی)بیساکھی میلہ میں شرکت کے لیے پاکستان آئے 1896 بھارتی سکھ یاتری سردار رویندر سنگھ کی قیادت میں تین سپیشل ٹرینوں کے ذریعے حسن ابدال سے ننکانہ صاحب پہنچ گئے اور گور د وارہ جنم استھان ننکانہ صاحب میں حاضری ،مذہبی رسومات اداکیں ،ضلعی انتظامیہ کی طرف سے سکھ یاتریوں کا پرتپاک استقبال کیا گی ڈپٹی کمشنر راجہ منصورا حمد ، ایس پی خالدہ پروین ، آر ٹی اے سیکرٹری عطیہ قمر قریشی ، اے ایس پی ارسلان شاہزیب ، چیئرمین بلدیہ چوہدری نعیم احمد ، چیف آفیسر بلدیہ میاں فیاض احمد ، صدر پریس کلب ننکانہ صاحب ،ضلعی افسران اور عمائدین شہر نے سکھ یاتریوں پر پھولوں کی پتیاں نچھاور کیں اور انہیں پھولوں کے ہار پہنائے ،ڈپٹی سیکرٹری شرائنز عمران گوندل ،پیلک ریلیشز آفیسر عامر حسین ہاشمی ان کے ہمراہ ،ڈپٹی ایڈمنسٹریٹر ننکانہ عمر جاوید اعوان ،اور کیئر ٹیکر عتیق گیلانی نے مہمانوں کو خصوصی ویلکم کہا۔رودوارہ جنم استھان کے احاطہ میں سکھ یاتریوں نے کرتار پور راہدری کھولنے اور بہترین انتظامات کرنے پر عمران خان زندہ باد کے نعرے لگائے۔پارٹی لیڈر سردار ہر ویندر سنگھ خالصہ نے کہا کہ ہم اپنی عزت افزائی اور مہمان نوازی پر بہت خوش ہیں ،پاکستانی حکومت اور ٹرسٹ بورڈ کے چیئرمین و سیکرٹری نے بہت عمدہ انتظامات کئے ،گورو جی کی دھرتی کو شاد و آباد رکھنے اور یہاں کی ترقی و خوشحالی کیلئے ہم دعا گو ہیں ۔سردار ہر ویندر سنگھ خالصہ نے کہا یہ تہوار ہر سال چودہ اپریل کو منایا جاتا ہے اور دنیا بھر میں رہنے والے سکھوں کے لئے انتہائی مقدس سمجھا جاتا ہے، اس دن ان کے دسویں گرو (گروگوبند سنگھ) نے پانچ پیاروں کا امتحان لے کر سکھ مذہب میں ذات پات کے تصّور کو ختم کیا تھااس موقع پر غسل کا اہتمام کیا جاتا ہے ۔انگلینڈ سے آئے سردار اوتار سنگھ سنگھیڑا نے کہا کہ پوری سکھ قوم حکومت پاکستان اور عمران خان کی بے حد شکر گزار ہے ہم حکومتی انتظامات کی جتنی بھی تعریف کریں کم ہے ۔پاکستان سکھ گورو دوارہ پر بندھک کمیٹی سردار گوپال سنگھ چاولہ نے کہا کہ سکھ قوم کو تقسیم کرنے کی بھارتی کوشش کبھی کامیاب نہیں ہو گی ۔سکھ خواتین نے اعلی انتظامات پر حکومت پاکستان کا شکریہ ادا کرتے ہوئے خوب الفاظ میں تعریف کی ،ترجمان بورڈ عامر حسین ہاشمی کا کہنا ہے کہ یاتریوں کی جانب سے ہمارے انتظامات کی تعریف قابل تحسین عمل ہے۔دریں اثنا بیساکھی تہوار کے موقع پر گوردوارہ جنم استھان ننکانہ صاحب میں 1947 سے قبل ہندوستان کے گاوں کلا نور ضلع گرداسپور کے رہائشی دو دوست خاندانوں کا ملاپ ہو گیا۔ دونوں گلے مل کر خوشی کا اظہار کرنے لگے۔ جذباتی مناظر نے لوگوں کو متاثر کر دیا۔ عبدالرحمان کا خاندان 1947میں ہجرت کر کے پاکستان آ کر گوجرہ شہر میں آباد ہو گئے تھے۔ جبکہ شنگارہ سنگھ کا خاندان گاؤں کلا نور ضلع گرداسپور انڈیا میں ہی مقیم رہا۔ اس طرح دونوں خاندانوں کا دوستی کا رشتہ 71 سال بعد دوبارہ جڑ گیا۔

مزید :

صفحہ آخر -