ذہنی نشو ونما اور صحت کیلئے میدان آباد ہو تے رہنے چاہیے ، ذکر اللہ مجاہد

ذہنی نشو ونما اور صحت کیلئے میدان آباد ہو تے رہنے چاہیے ، ذکر اللہ مجاہد

لاہور(نمائندہ خصوصی ) امیر جماعت اسلامی لاہور ذکر اللہ مجاہد نے کہا ہے کہ جس معاشرے میں میدان آبادہوں تو ہسپتال ویران ہو جاتے ہیں کیونکہ ایک صحتمند جسم ہی صحتمند دماغ رکھتا ہے اور ذہنی نشو ونما اور صحت کے لیے میدان آباد ہو تے رہنے چاہیے تا کہ صحتمند معاشرہ تشکیل پا سکے۔ نوجوان کھیل کود کے ساتھ تعلیم تروبیت اور خدمت خلق کے میدان اعلیٰ کارکردگی کامظاہرہ کریں اور بڑھ چڑھ کر حصہ لیں۔ ایک اچھا کھلاڑی جذبہ خدمت خلق ،اخلاق اور تعلیم و تربیت کے بغیر نا مکمل ہے۔ ان خیالات کا اظہار گذشتہ روز انہوں نے بلیو گروپس آف کمپنیز کے زیر اہتمام ریس کورس پارک میں ہونے والے کرکٹ سیزیز کی افتتاحی تقریب میں نوجوان کھلاڑیوں اور شرکاء سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔

اس موقع اسلامی سوسائٹی آف سپین کے نائب صدر قاری ظفر بن یوسف، بلیوگروپ کی جانب سے مہمان خصوصی سیدکاظم شاہ، میاں محمد افضل، شاہد حامد بٹ،محمد صابر رضا سمیت بڑی تعداد میں نوجوانوں نے شرکت کی۔ ذکر اللہ مجاہد نے مزید کہا کہ کھلاڑی اور کھیل کے میدان نوجوان نسل کا شعور بیدار کر کے ان میں مقابلے کا رجحان پیدا کرتے ہیں۔ اس طرح کی غیر نصابی سرگرمیاں ہی صحتمند معاشرے کو پروان چڑھاتی ہیں۔ شہر لاہور سمیت ملک بھر کے بڑے کالجوں اور یونیورسٹیز میں تیزی سے پھیلتی ہوئی منشیات جیسی لعنت سے نوجوان نسل کو بچانے کیلئے کھیلوں کے میدان آباد کرنے ہوں گے۔ انہوں نے کہا کہ ہماری بدقسمتی ہے کہ ملک میں ہر شعبہ میں بے پناہ ٹیلنٹ موجود ہونے کے باوجود آگے جانے کیلئے رشوت اور سفارش کا ہونا لازم بن چکا ہے ۔ قابلیت اور اہلیت رکھنے والے نوجوان کھلاڑی سہولیات اور حکومتی سرپرستی نہ ہونے کی بنا پر ضایع ہو رہے ہیں۔ذکر اللہ مجاہد نے کہا کہ جب تک حکومتی سطح پر ہر شعبہ میں نوجوان نسل کیلئے میرٹ پر فیصلے نہیں ہوں گے ملک ترقی نہیں کر سکتا ۔

مزید : میٹروپولیٹن 1