نیب ،ایف آئی اے کے احتساب کیلئے بھی ادارہ ہونا چاہیے ،پیپلزپارٹی

نیب ،ایف آئی اے کے احتساب کیلئے بھی ادارہ ہونا چاہیے ،پیپلزپارٹی

اسلام آباد ( آن لائن ) پاکستان پیپلزپارٹی کی خواتین رہنماؤں نے کہا ہے کہ چیئرمین نیب کو اب خواتین کی عزت کا خیال آ گیاہے کہ وہ بیگم شہباز شریف اور ان کی بیٹیوں کو سوالنامہ بھیج رہے ہیں جبکہ سابق صدر کی بہن فریال تالپورکو عدالتوں میں گھسیٹا جارہا ہے۔ نیب اور ایف آئی اے کے اوپر بھی کوئی ادارہ ہونا چاہیے جو ان کا احتساب کرے۔ سی پیک ملک میں ریڑھ کی ہڈی کی حیثیت رکھتا ہے لیکن چین سے طے ہونے والی شرائط کو عوام سے پوشیدہ رکھا جارہا ہے۔ وزیراعظم چین ،سعودی عرب ،یو اے ای سے ملنے والے پیسے اور ڈیم فنڈ کا حساب دیں کہ تمام دولت کہاں گئی۔ وفاقی وزیر خسرو بختیار نے جنوبی پنجاب محاذ کرپشن بچانے کیلئے کیا نیب ان کے گھر چھاپے کیوں نہیں مار رہی اب یہ کرپٹ وزیر وزیراعظم کے ساتھ چائنا جائیں گے۔ شہزاد اکبر کو اب استعفیٰ دے دینا چاہیے کیونکہ جب ایمنسٹی آرہی ہے تو ان کی کیا ضرورت ہے حکومتی وزراء کو خود پتہ نہیں کہ ان کی وزارت کتنے دن چلے گی۔ وزیر برائے پارلیمانی امور اعجاز شاہ کہتے ہیں کہ اگر عوام سڑکوں پر آئی تو ان کی چھترول ہوگی ان کو پتہ نہیں عوام ڈرنے والی نہیں اگر چھترول ہوئی تو بنی گالہ میں یا وزیراعظم ہاؤس میں بیٹھے لوگوں کی ہوگی۔ ان خیالات کا اظہار مرکزی سیکرٹری اطلاعات پیپلزپارٹی نفیسہ شاہ اور ڈپٹی سیکرٹری اطلاعات پیپلزپارٹی پلوشہ خان نے مشترکہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے کیا‘ پیپلزپارٹی کے چیف میڈیا کوآرڈینیٹر نذیر ڈھوکی بھی ان کے ہمراہ تھے۔

پیپلزپارٹی

مزید : پشاورصفحہ آخر