پرائس کنٹرول کمیٹیوں کی عدم توجہی سے تاریخ ساز مہنگائی ہو چکی،میاں سلیم

پرائس کنٹرول کمیٹیوں کی عدم توجہی سے تاریخ ساز مہنگائی ہو چکی،میاں سلیم

لاہور (نیوز رپورٹر)انجمن تاجران لاہور کے جوائنٹ سیکرٹری میاں سلیم نے کہاہے کہ رمضان سے قبل مارکیٹ میں کھانے پینے کی چیزوں کی قیمتیں آسمان سے باتیں کرنے لگی ہیں جبکہ ضلعی انتظامیہ نے آنکھیں موند رکھی ہیں،جس کی وجہ سے مارکیٹوں میں تاریخ ساز مہنگائی ہو چکی ہے اور غریب عوام مہنگائی کی دہائی دیتے پھر رہے ہیں پرائس کنٹرول کمیٹیوں کی عدم توجہی کے باعث کھانے پینے کی اشیاء ، فروٹ سبزیاں اور دیگر اشیائے ضروریہ کی قیمتیں عوام کی دسترس سے باہر ہو چکی ہیں۔

،یہ بات انہوں نے گزشتہ روز تاجروں کی ایک تقریب میں خطاب کرتے ہوئے کہی۔ انہوں نے کہاکہ تاجر برادری کمشنر اور ڈپٹی کمشنر لاہور اور ضلعی انتظامیہ سے مطالبہ کرتی ہے کہ روزانہ کی بنیاد پر مارکیٹوں میں خود آکر سبزیوں ، فروٹ اور اشیائے خوردونوش کی قیمتوں کا جائزہ لیں اور روانہ ایک نئی مارکیٹوں کا دورہ کریں۔

اور سیزوں اور فروٹ سمیت اشیائے خوردونوش کی قیمتوں کی لسٹیں سامنے آویزاں کئے جائیں اور زائد قیمت پر اشیائے ضروریہ فروخت کرنے والوں کو بھاری جرمانے اور قید جیسی سزائیں دی جائیں کیونکہ ڈر اور خوف کے علاوہ کسی اور ذریعے سے لوگوں سے قانون کی پابندی کروانا مشکل امر ہے ، میاں سلیم نے کہا کہ پرائس کنٹرول کمیٹیوں کی کارکردگی صفر ہو چکی ہے جس فائدہ ہول سیلر ز اور دکاندار اٹھا رہے ہیں منڈیوں سے لے کر عام ریڑھی بان دونوں ہاتھوں سے عوام کو لوٹنے میں لگے ہوئے ہیں ۔پرائس کنٹرول کمیٹیاں روٹین میں مارکیٹوں میں نظر نہیں آتی ہیں، اگر کسی شخص کی پرزور شکایت پر کسی کے خلاف کاروائی ہوتی بھی ہے تو وہ دکاندار تھانے میں پیسے دے کر چھوٹ جاتا ہے ۔ انہوں نے حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ یونین کونسلز کے چےئرمینوں اور وائس چےئرمینوں کو رمضان المبار ک میں کمشنر کی اتھارٹی دی جائے تاکہ وہ مارکیٹوں میں جا کر مصنوعی مہنگائی کرنے والے مافیا کو قانون کی گرفت میں لا سکیں۔ انہوں نے کہاکہ ضلعی انتظامیہ اور کمشنر لاہور ذخیرہ اندوزی کرنے والے مافیا کے خلاف بھی حرکت میں آئیں اور اس مافیا کے گوداموں پر چھاپے مارے جائیں اور انہیں اشیائے ضروریہ اور سبزیاں و پھل سٹاک کر کے مصنوعی مہنگائی کرنے والوں کو قانون کی گرفت میں لا کر ان کی حوصلہ شکنی کی جائے

مزید : کامرس