پروین سلطانہ صبا غزل کی فطری شاعرہ ہیں، ڈاکٹر تنظیم الفردوس

پروین سلطانہ صبا غزل کی فطری شاعرہ ہیں، ڈاکٹر تنظیم الفردوس

  

کراچی (اسٹاف رپورٹر) بزم یاور مہدی کی 151 ویں تقریب میں کینیڈا سے آئی ہوئی معروف شاعرہ پروین سلطانہ صباء کے پہلے مجموعہ کلام ’’موج صباء‘‘ کی رسم اجراء معروف شاعرہ سبین سیف کی قیام گاہ پر منعقد ہوئی۔ جس میں شہر کی علمی ، ادبی شخصیات نے بڑی تعداد میں شرکت کی۔ صدر تقریب ڈکاٹر تنظیم الفردوس نے کہا کہ یہ عہد جدید میں غزل کی فطری شاعرہ ہیں۔ جذبات کے اظہار میں ایک خاص سلیقہ رکھتی ہیں۔ ان کے ہاں روایت کا رچاؤ بھی ہے اور کلاسیکی بھی ۔ ان کا غم ہمیں معاشرے کا غم نظر آتا ہے ۔ پروفیسر انیس زیدی نے کہا کہ انہیں اپنے محسوسات اور کیفیات کو پیش کرنے کا ہنر آتا ہے ۔ یہ فیصلہ کرنا مشکل ہے کہ یہ اچھی شاعرہ ہیں یا اچھی مصورہ ۔ کرامت اللہ غوری نے کہا کہ یہ لفظوں سے بھی تصویر بناتی ہیں اور رنگوں سے بھی ۔ انہیں نے بڑی محنت سے حالات کا مقابلہ کیا۔ سبین سیف نے کہا کہ ان کا ہر شعر پڑھ کر دوبارہ پڑھنے کو دل چاہتا ہے ۔ معروف شاعرہ پروین حیدر نے منظوم خراج تحسین پیش کیا۔ ناظم تقریب ندیم ہاشمی نے کہا کہ ان کی شاعری میں روایت اور جدیدیت کا امتزاج ہے ۔ میزبان سیف اللہ خان نے کہا کہ انکے گھر کے دروازے ہمیشہ علمی ادبی شخصیات اور انکی تقریبات کیلئے کھلے رہیں گے ۔ تقریب میں دوست محمد فیضی، انور شعور، عابد رضوی، سرور جاوید، ڈاکٹر خورشید ہاشمی، افشاں شعور، یاسمین فاروقی، ضیغم زیدی، عاصم ترمذی، پروفیسر سلطان احمد، کشور زہرہ، ریحانہ روحی، یامین خان، اسماء ترمذی، فرحت سعید، روشن خیال، اویس ادیب انصاری، جمیل سید، شگفتہ فرحت، عبدالصمد تاجی، ناز عارف ودیگر علمی ادبیات نے شرکت کی۔ تقریب کی ابتداء عبدالباسط نے تلاوت کلام پاک سے کی جبکہ پروین حیدر نے نعتیہ شعر پیش کیا اس موقع پر بزم یاور مہدی کی جانب سے ڈاکٹر تنظیم الفردوس ، پروین سلطانہ صباء کو لائف ٹائم اچیومنٹ ایوارڈ دیا گیا ۔ میزبان سبین سیف انکے شوہر سیف اللہ خان ، صاحبزادوں فہد اللہ خان، سعد اللہ خان نے تمام حاضرین کیلئے پر تکلف عشائیہ کا بھی اہتمام کیا ۔ تمام مہمانوں کو گلدستے اور کتابوں کے تحائف بھی پیش کیئے گئے۔

مزید :

راولپنڈی صفحہ آخر -