دہرے قتل کا کیس، چیف جسٹس کے حکم پر ملزم کمرہ عدالت سے گرفتار

دہرے قتل کا کیس، چیف جسٹس کے حکم پر ملزم کمرہ عدالت سے گرفتار
دہرے قتل کا کیس، چیف جسٹس کے حکم پر ملزم کمرہ عدالت سے گرفتار

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)سپریم کورٹ آف پاکستان نے دہرے قتل کے ملزم کی بریت کیخلاف درخواست پر ملزم اختر سلیم کو کمرہ عدالت میں گرفتارکرا دیا جبکہ اس کے والدکو بری کردیا۔

تفصیلات کے مطابق سپریم کورٹ میں دہرے قتل کے ملزم کی بریت کیخلاف درخواست پر سماعت ہوئی، چیف جسٹس آصف سعید کھوسہ کی سربراہی میں بنچ نے سماعت کی،ٹرائل کورٹ نے اخترسلیم اور شریک ملزم فضل ربی کو عمرقید کی سزا سنائی تھی جبکہ ہائیکورٹ نے دونوں ملزمان کو بری کردیا تھا۔دوان سماعت عدالت نے کہا کہ اخترسلیم کی محمد آصف اور غلام مصطفی کی بہن سے شادی ہوئی تھی،گھریلو تنازع کے باعث بیوی اپنے والدین کے گھر تھی، ملزمان نے وکیل کرنے کےلئے عدالت سے کیس میں التوا کی درخواست کی ،چیف جسٹس آصف سعید کھوسہ نے کہا کہ آپ کو 2 ماہ پہلے نوٹس جاری کیا جا چکا ہے، 2 ماہ کا ٹائم دیا تھا جو آپ نے ضائع کر دیا، چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ آج کا کام آج ہی ہوگا،سپریم کورٹ نے ہائیکورٹ کا فیصلہ کالعدم قراردیااورٹرائل کورٹ کا فیصلہ بحال کرتے ہوئے ملزم کو فوری گرفتار کرنے کا حکم دیدیا،چیف جسٹس کے حکم پر ملزم اختر سلیم کو کمرہ عدالت سے گرفتار کرلیا گیا،عدالت نے اختر سلیم کے والد فضل ربی کو مقدمے سے بری کردیا۔

مزید : قومی /علاقائی /اسلام آباد