معاشی نمو میں بہتری کیلئے شرح سود میں مزید کمی کی جائے،پیاف

معاشی نمو میں بہتری کیلئے شرح سود میں مزید کمی کی جائے،پیاف

  

لاہور(پ ر) چیئرمین پاکستان انڈسٹریل اینڈ ٹریڈرز ایسوسی ایشنز فرنٹ (پیاف) میاں نعمان کبیر نے کہا ہے کہ کرونا وائرس کے باعث ملکی معیشت جمود کا شکار ہونے کے باوجود ملک میں بلند شرح سود صنعتی ترقی کی راہ میں رکاوٹ ہے اگرچہ اسٹیٹ بینک نے دو بار شرح سود میں کمی کی ہے لیکن اس کے باوجود اب بھی موجودہ معاشی صورتحال کو دیکھتے ہوئے شرح سود بہت زیادہ ہے ،معاشی نمو میں بہتری کیلئے شرح سود میں مزید کمی کی جائے۔مزید براں ا سٹیٹ بینک نے ری فنانس سکیم میں جو حالیہ قدامات اٹھائے ہیں ان پر برق رفتاری سے عمل درآمد یقینی بنایا جائے۔ اس مشکل وقت میں صنعت و تجارت کو سہارا دینے کے لئے ریفنڈز ادائیگیوں کے نظام کو تیز اور موٗثر بنیا جائے۔ چیئرمین پیاف میاں نعمان کبیر نے سیئنر وائس چیئرمین ناصر حمید خان اور وائس چیئرمین پیاف جاوید اقبال صدیقی کے ہمراہ بیان دیتے ہوئے کہا کہ پیدوار میں کمی، زیادہ شرح سود اور کیش فلو کے مسائل کی وجہ سے برآمدات گراوٹ کا شکار ہیں اور ملکی معیشت کساد بازاری کا شکار ہے۔ شرح سود کم نہ ہونے سے سرمایہ کاری میں کمی اور بے روزگاری میں اضافہ ہورہا ہے۔ کرونا وائرس کے باعث ملک میں معاشی نمو میں کمی کا خدشہ ہے جس سے نمٹنے کیلئے حکومت صنعتی شعبہ کو معاشی ریلیف دے۔کرونا وائرس کے باعث امریکہ میں معاشی صورتحال سے نمٹنے کیلئے ان کے مرکزی بینک نے شرح سود میں کمی کردی ہے کیونکہ شرح سود میں کمی سے معاشر سرگرمیوں میں اضافہ ہوتا ہے انہوں نے کہا کہ کہ امریکی جریدے بلومبرگ کے مطابق پاکستان ایشیاء میں سب سے زیادہ شرح سود کے حامل ممالک میں شامل ہے

مزید :

کامرس -