پنجاب حکومت کا گندم خریداری کے ہدف میں 5لاکھ ٹن اضافے کا اعلان

  پنجاب حکومت کا گندم خریداری کے ہدف میں 5لاکھ ٹن اضافے کا اعلان

  

لاہور(لیڈی رپورٹر)وزیر خوراک پنجاب عبدالعلیم خان نے پنجاب حکومت کے گندم خریداری کے ہدف میں 5لاکھ ٹن اضافے کا اعلان کیا ہے تاکہ کسی بھی قسم کی غیر متوقع صورتحال کیلئے گندم کا سٹاک میسر ہو سکے۔سینئر وزیر پنجاب عبدالعلیم خان نے فلور ملز مارلکان سے اپیل کی ہے کہ وہ رمضان المبارک کے مقدس مہینے میں آٹے کی قیمتوں میں رضا کارانہ طور پر کمی کا اعلان کریں اور کرونا وائر س کے باعث پنجاب حکومت کی طرف سے رمضان بازار وں کا انعقاد نہ کرنے کے فیصلے کی روشنی میں اس امر کو یقینی بنائیں کہ مارکیٹ میں کم نرخوں پر آٹے کی وافر فراہمی جاری رہے۔۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے فلور ملز ایسوسی ایشن کے سینٹر ل چیئرمین عاصم رضا کی قیادت میں ملاقات کرنے والے وفد سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔عبدالعلیم خان نے یقین دلایا کہ مل مالکان کے جائز تحفظات دور ہوں گے اور وہ خود دورے کر کے "آن گراؤنڈ" صورتحال کا جائزہ لیں گے۔انہوں نے ایسوسی ایشن سے ذخیرہ اندوزوں کی حوصلہ شکنی کرنے کی اپیل کرتے ہوئے کہا کہ کاروبار کرنا اور منافع کمانا ہر ایک کا حق ہے لیکن ناجائز کام نہیں ہونا چاہیے۔سینئر وزیر عبدالعلیم خان نے یقین دلایا کہ پنجاب سے دیگر صوبوں میں گندم کی نقل و حمل کے بارے میں نئی پالیسی پر عمل ہوگا اور خیبر پختونخوا ہ سمیت کوئی صوبہ پنجاب میں خود گندم کی خریداری نہیں کرے گا البتہ اْن کی ضرورت کے مطابق پنجاب حکومت گندم خرید کر مہیا کرے گی۔فلور ملز ایسوسی ایشن کے سینٹر ل چیئرمین عاصم رضا نے کہا کہ گندم کی کبھی بھی قلت نہیں رہی،آج بھی وافر سٹاک موجود ہے البتہ اس کی تقسیم اور دیگر امور ضرور حل طلب ہیں۔ انہوں نے سینئر وزیر کی اپیل پر رمضان المبارک کیلئے رعائتی نرخوں پر آٹے کی فراہمی اپنی اور اپنے ساتھیوں کی طرف سے ہر ممکن تعاون کا یقین دلایا۔ سیکرٹری خوراک پنجاب وقاص علی محمودکے علاوہ فلور ملز ایسوسی ایشن کے سابق عہدیداران میاں محمد ریاض اور حافظ احمد قادر بھی ملاقات میں موجود تھے۔دریں اثناء عبدالعلیم خان نے پنجاب کے بعض اضلاع سے گندم کی ترسیل روکے جانے کی خبر کا نوٹس لیتے ہوئے سیکرٹری خوراک سے جنوبی پنجاب سے گندم باہر نہ آنے کی تفصیلات طلب کر لی ہیں اور متعلقہ ڈپٹی کمشنرز سے آج ویڈیو لنک پر اجلاس طلب کر لیا ہے۔انہوں نے واضح کیا کہ پنجاب حکومت کی پالیسی کے مطابق صوبے بھر کے کسی بھی ضلع سے کسی دوسرے ضلع میں گندم لانے اور لے جانے پر کسی قسم کی کوئی پابندی نہیں البتہ صوبے سے باہر گندم کی سمگلنگ اور ترسیل کی ہر گز اجازت نہیں دی جائے گی۔

عبدالعلیم خان

مزید :

صفحہ آخر -