آخر میں بھی تو پتہ چلے کس کو راشن دیا گیا؟ اس میں کیا کیا شامل ہے: سندھ ہائیکورٹ

  آخر میں بھی تو پتہ چلے کس کو راشن دیا گیا؟ اس میں کیا کیا شامل ہے: سندھ ...

  

کراچی (آئی این پی) سندھ ہائیکورٹ نے راشن کی غیر منصفانہ تقسیم کے معاملے پر صوبائی حکومت اور دیگر سے 24 اپریل کو جواب طلب کر لیا۔ سندھ ہائیکورٹ میں لاک ڈاؤن کے دوران صوبائی حکومت کی جانب سے راشن کی غیرمنصفانہ تقسیم کیخلاف درخواست کی سماعت ہوئی۔ ایڈیشنل ایڈووکیٹ جنرل نے کہا کہ صوبائی حکومت اب تک ڈھائی لاکھ راشن بیگ تقسیم کرچکی ہے۔ ڈھائی لاکھ راشن بیگ کہاں کہا ں تقسیم کیے، کچھ تو ریکارڈ ہوگا؟ ڈویژنل سطح پر کمیٹیاں بنادیں۔ ڈی سیز اور یوسی چیئرمین معاملات دیکھ رہے ہیں۔جسٹس محمد علی مظہر نے کہا کہ آخر ہمیں بھی تو پتہ چلے کس کو راشن دیا گیا؟درخواست گزار نے انکشات کیا کہ سندھ حکومت کے فراہم کردہ راشن میں جو دال دی، اس میں کیڑے ہیں۔ جس پر عدالت نے حیرت کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ کیا عوام کیڑے والی دال کھائیں گے؟جسٹس محمد علی مظہر نے کہا کہ عوام کو راشن بیگ میں کیا کیا دیا جارہا ہے، عدالت کو بھی بتایا جائے؟ عدالت نے سندھ حکومت، ڈپٹی کمشنر ساؤتھ اور دیگر سے 24 اپریل کو تفصیلی جواب طلب کرلیا۔

سندھ ہائیکورٹ

مزید :

صفحہ آخر -