وہ وقت جب تیونس کے صدر پاکستان کے پاسپورٹ پر دنیا بھر میں سفر کرتے رہے

وہ وقت جب تیونس کے صدر پاکستان کے پاسپورٹ پر دنیا بھر میں سفر کرتے رہے
وہ وقت جب تیونس کے صدر پاکستان کے پاسپورٹ پر دنیا بھر میں سفر کرتے رہے

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

اسلام آباد (ویب ڈیسک) دنیا میں پاکستان کے سبز پاسپورٹ کی عزت بنانے کیلئے ہر پاکستانی کوشش کرتا ہے اور ایک وقت ایسا بھی تھا جب تیونس کے صدر بھی پاکستان کے پاسپورٹ پر سفر کرتے تھے ۔
وزیردفاع خواجہ آصف نے بتایاکہ ’میں تیونس گیا ،تیونس کے صدر کو ملاان کی 90سال سے زائد عمر تھی،انہوں نے بتایاکہ مجھے بھی پاکستانی پاسپورٹ دیاگیاجب تیونس کی آزادی کی جنگ کے دن تھے،اسی پاکستانی پاسپورٹ پر سفر کرتاتھا،اپنے مقصدکے لیے اقوام متحدہ سمیت کہیں بھی اسی پاسپورٹ پر جاتا‘۔
خواجہ آصف نے بتایاکہ انہوں نے پاسپورٹ دینے والوں کے حوالے سے پوچھاتو بتایاکہ ’حکومت پاکستان نے دیالیکن ہمارے ساتھ سرظفراللہ رابطے میں تھےجو اس وقت وزیرخارجہ تھے‘۔اپنی بات جاری رکھتے ہوئے وزیردفاع کہتے ہیں کہ ’انہوں نے ہی مجھے بتایاکہ مراکوکی قیادت کو بھی پاکستانی پاسپورٹ دیاگیا، الجزائر کی قیادت کو بھی پاسپورٹ دیاگیا‘۔
خواجہ آصف کاکہناتھاکہ جتنی بھی آزادی کی جنگیں تھیں ، چاہے وہ تیونس ہویا الجزائر یا پھرمراکو یا فلسطین، اس کی حمایت پاکستان نے اس لیے کی کہ پاکستان جس نام پر بنا ہے ، اس پر لازم ہوجاتاہے کہ اس نام کیساتھ جس کا ناطہ ہو، اس کی حمایت کرے۔