میوہسپتال میں تیزاب پھینکنے سے جھلس جانے والی 3نرسوں کی حالت تشویشناک

میوہسپتال میں تیزاب پھینکنے سے جھلس جانے والی 3نرسوں کی حالت تشویشناک

لاہور(سپیشل رپورٹر)میو ہسپتال ایمرجنسی وارڈ میں شوہر نے گھریلو ناچاقی پر نرس بیوی سمیت تین نرسز اور دیگر 4افراد پر تیزاب پھینکنے والے ملزم سے پولیس اور دیگر قانون نافذ کرنے والے اداروں کی خصوصی ٹیموں نے مختلف پہلوﺅں پر تفتیش شروع کردی ہے جبکہ ہسپتال میںدو نرسوں سمیت چار افراد کی حالت تشویشناک بیان کی جاتی ہے۔ معلوم ہوا ہے کہ ایک روز قبل شیخوپورہ کے رہائشی عمران بابو نے گھریلو ناچاقی پر میو ہسپتال ایمرجنسی وارڈ کے اندر اپنی بیوی نرس رحمانہ لیاقت پر تیزاب پھینکنے کی کوشش کی تو اس دوران تیزاب رحمانہ اسکی دو ساتھی نرسز شازیہ ، شمع ناز ، آیا بشیراں بی بی ، وارڈ کلینر عمران ،مریضہ صابراں بی بی اور مریض عمران پر گر گیا تھا جس کی وجہ سے یہ تمام افراد بری طرح جھلس گئے تھے اسی دوران ملزم نے وہاں سے فرار ہونے کی کوشش میں وہاں موجود مزید افراد پر بھی تیز اب پھینکنے کی کوشش کی تاہم وہاں موجود لوگوں نے ملزم عمران بابو کو پکڑ کر اسکی زبردست چھترول کرنے کے بعد اسکو پولیس کے حوالے کردیا تھا ،پولیس کے مطابق ملزم نے دوران تفتیش انکشاف کیاہے کہ اسکا اپنی بیوی رحمانہ کے ساتھ گزشتہ دو سال سے جھگڑا چل رہا ہے اور اب وہ اس سے صلح چاہتا تھا مگر اسکی بیوی راضی نہ تھی جس پر اس نے اس پر تنگ آکر اس پر تیزاب پھینکاہے۔دریں اثناءوزیر اعلی پنجاب کی جانب سے اس واقعہ کا نوٹس لینے پر پولیس اور دیگر قانون نافذ کرنے والے اداروں کی2 خصوصی ٹیموں نے گزشتہ روز تھانہ گوالمنڈی میں جاکر مذکورہ ملزم عمران سے مختلف پہلوﺅں پر تفتیش کر تے ہوئے اسکی ایک مفصل رپورٹ تیار کرلی ہے جوکہ وزیر اعلی پنجاب کو پیش کی جائے گی۔ علاوہ ازیں میو ہسپتال میں نرس رحمانہ ، شازیہ اورشمع ناز سمیت چار افراد کی حالت نازک بتائی جارہی ہے ۔پولیس کے مطابق ملزم عمران سے مختلف پہلوﺅں پر تفتیش عمل جاری ہے جس میں جلدہی حقائق سامنے آئےں گے ۔

مزید : میٹروپولیٹن 1