طلبہ ڈینگی اگاہی مہم میں بڑھ چڑھ کر حصہ لیں گے:ڈاکٹر مجاہد کامران

طلبہ ڈینگی اگاہی مہم میں بڑھ چڑھ کر حصہ لیں گے:ڈاکٹر مجاہد کامران

لاہور(لیڈی رپورٹر)پنجاب یونیورسٹی وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر مجاہد کامران نے کہا ہے کہ پنجاب یونیورسٹی کے طلباوطالبات حکومت پنجاب کی ڈینگی آگاہی مہم میں رضاکارانہ طور پر بڑھ چڑھ کر حصہ لیں گے ۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے پنجاب یونیورسٹی کے ڈینگی ریسرچ گروپ کے اعلیٰ سطح کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ انہوںنے کہا کہ پنجاب یونیورسٹی کا ڈینگی ریسرچ گروپ مختلف موضوعات اور پہلوو¾ں پر تحقیق کر رہا ہے جس سے اس بیماری کی روک تھام، آگاہی اور انسانوں کی جانیں بچانے میں مدد ملے گی۔ چئیرمین ڈینگی ریسرچ گروپ ڈاکٹر سعد اختر نے اس موقع پر تفصیلی پریزینٹیشن دیتے ہوئے کہا کہ لاہور میں مختلف مقامات سے ڈینگی کے نمونے اکٹھے کئے گئے ہیں اور ڈیزرٹ کولرز میں سب سے زیادہ ڈینگی مچھر کے لاروں کے نمونے ملے ہیں۔ سنٹرفار ایکسیلنس ان مالیکولر بائیولوجی کے پروفیسر ڈاکٹر محمد ادریس نے کہا کہ ان کے شعبے نے ڈینگی کے چار ہزار مشکوک نمونوں کی سیروٹائپنگ اور DENV کے مفت ٹیسٹ کی سہولت فراہم کی ہے۔ یونیورسٹی آف ہیلتھ سائنسز کے پروفیسر ڈاکٹر محمد اسلم نے کہا کہ گزشتہ سال ڈینگی بخار کے مریضوں میں صرف 27 فیصد خواتین جبکہ باقی مرد پائے گئے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ڈینگی مچھر گھروں کے اندر کم رہتا ہے اور باہر کے ماحول میں دن کے اوقات کے دوران کاٹتا ہے۔ پروفیسر ڈاکٹر رخسانہ کوثر نے اس موقع پر شعبہ کی جانب سے ڈینگی بخار سے متعلق انسانی نفسیات اور رویوں کے حوالے سے مختلف موضوعات پر کی جانے والی تحقیقات سے میٹنگ کے شرکاءکو آگاہ کیا۔ ڈاکٹر وسیم اکرم نے کہا کہ اس سال چونکہ مون سون سیزن تاخیر سے شروع ہوا ہے اس لئے ڈینگی کے پھیلنے کا اس سال کا وقت مختلف ہو گا۔ انہوں نے کہا کہ ڈینگی کی افزائش والی جگہوں کی سخت نگرانی کرنا ہو گی۔ ڈاکٹر ہارون احسان نے اس موقع پر فاطمہ میموریل ہسپتال کی جانب سے مختلف موضوعات پر کی جانے والی تحقیقات سے آگاہ کیا

مزید : میٹروپولیٹن 1