چینی باشندوں کی متنازعہ جاپانی جزیروں پر ملکی جھنڈا لہرانے کی ناکام کوشش

چینی باشندوں کی متنازعہ جاپانی جزیروں پر ملکی جھنڈا لہرانے کی ناکام کوشش

 ٹو کیو(آن لائن )چین کے ایک درجن سے زائد افراد نے متنازعہ جاپانی جزیروں پر چینی جھنڈا لہرانے کی ایک ناکام کوشش کی، جس کے نتیجے میں وہ جاپان کی جیلوں میں پہنچ گئے ہیں۔ چین نے گرفتار افراد کی رہائی کا مطالبہ کیا ہے۔جاپان اور چین کے درمیان سینکاکو جزائر پر برسوں سے تنازعہ جاری ہے۔ دونوں ملک ان جزیروں پر ملکیت کا دعویٰ رکھتے ہیں۔ چین کے خود مختار علاقے ہانگ کانگ سے دو درجن کے قریب چینی باشندوں نے ایک کوشش کی کہ وہ کسی طرح مرکزی سینکاکو جزیرے پر چینی جھنڈے لہرا سکیں۔ یہ افراد ہانگ کانگ سے کشتیوں پر سوار ہو کر روانہ ہوئے تھے۔ ان میں سے چودہ افراد ساحلی پٹی تک پہنچنے میں بھی کامیاب ہوئے اور ان کو پہنچتے ہی گرفتار کر لیا گیا۔ سات افراد نے اپنی کشتیوں سے سمندر میں چھلانگیں لگا کر خود کو گرفتاری سے بچایا اور دو نے جاپانی سمندری سکیورٹی کا ایکشن دیکھتے ہوئے اپنی کشتیوں کا رخ واپس ہانگ کانگ کی جانب پھیر لیا تھا۔اس واقعے کے حوالے سے جاپانی وزیراعظم یوشی ہیکو نوڈا نے بتایا کہ ملوث افراد کے ساتھ جاپانی قانون کے تحت کارروائی کی جائے گی۔ بظاہر گرفتار ہونے والے چینیوں پر امیگریشن قوانین کے منافی فعل انجام دینے کی فرد جرم عائد کی جا سکتی ہے۔ٹوکیو میں جاپان کے نائب وزیر خارجہ نے چینی سفیر کو بلا کربیجنگ حکومت کے لیے اپنی حکومت کا احتجاج بھی ریکارڈ کروایا۔چین نے جاپان سے مطالبہ کیا ہے کہگرفتار کیے گئے چین کے 14 شہریوں کو فوری اور غیرمشروط طور پر رہا کر دیا جائے۔ چین کے نائب وزیر خارجہ ف±و ڑِنگ نے اس حوالے ے بیجنگ میں جاپان کے سفیر سے ملاقات کی ہے جبکہ جاپان کے حکام سے فون پر بات بھی کی ہے۔

مزید : عالمی منظر