پنجاب یوتھ فیسٹیول، 14687 افراد کی باقاعدہ رجسٹریشن ہوگئی، رانا مشہود

پنجاب یوتھ فیسٹیول، 14687 افراد کی باقاعدہ رجسٹریشن ہوگئی، رانا مشہود

لاہور(سپورٹس رپورٹر)ڈپٹی سپیکرپنجاب اسمبلی اورچیف آرگنائزپنجاب یوتھ فیسٹیول رانامشہوداحمد نے کہاکہ پنجاب یوتھ فسٹیول 2012ءکی مقبولیت کا اندازہ اس بات سے لگایا جاسکتا ہے کہ اس حوالے سے بنائی جانے والی ویب سائٹ کو دو2 لاکھ 2 ہزار 2 سو 45 افراد وزٹ کرچکے ہیں۔ فیس بک پر 66 ہزار 408 کھیلوں کے شائقین نے اپنی پسندیدگی کا اظہار کیا ہے۔ یوتھ فیسٹیول 2102ءکیلئے اب تک 14,687 افرادنے خود کورضا کارانہ طورپر منسلک کیا ہے ان کی باقاعدہ رجسٹریشن کی گئی ہے ۔ وہ گزشتہ روز سپورٹس بورڈ کے زیراہتمام سینئرصحافیوں کے اعزاز میں دی گئی افطار پارٹی میں شرکاءسے خطاب کررہے تھے۔ اس موقع پر ڈی جی سپورٹس عثمان انور اورسب سے بڑی کرکٹ گیند بنانے کا اعزازحاصل کرنے والے لاہور کے دوبھائی عظیم سلیم اور قمرصدیق بھی موجود تھے۔ جنہوں نے 15 دنوں میں 42کلوگرام وزنی اور96انچ کی کرکٹ گیند بناکریوتھ فیسٹیول 2012ءکے ذریعے گینیز بک آف ورلڈ ریکارڈ کی دوڑ میں خود کوشامل کرالیا ہے۔ رانامشہود احمد نے بتایاکہ اس کرکٹ گیندپرعام کرکٹ میں استعمال ہونے والی گیند کا میٹریل استعمال کیا گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ کوئی بھی حکومت جب اتنے بڑے پیمانے پر کام کرتی ہے تو مخالفین اسے تنقید کا نشانہ ضرور بناتے ہیں۔ اگر تنقید مثبت ہو توکام کو مزید بہتر بنایا جاسکتا ہے اور منفی تنقید ہو تو نتیجہ کچھ حاصل نہیں ہوتا۔ پنجاب حکومت کے یوتھ ڈویلپمنٹ کے کام کی پذیرائی سے دلبرداشتہ لوگ اب جھوٹے پراپیگنڈے پر اتر آئے ہیںاورمن گھڑت کہانیاں اخباروں کی زینت بن رہی ہیںجس کا حقیقت سے دور دورتک کوئی تعلق نہیں ہے۔ اس حقیقت سے بھی سبھی آگاہ ہیں کہ سپورٹس فیسٹیول میں صرف ساڑھے چھ کروڑ کی رقم سے نوجوانوں کو ایسی مثبت سرگرمی فراہم کی گئی جس کی مثال بھی ماضی میں نہیں ملتیں۔ سپورٹس فیسٹیول کو جس ایمانداری کے ساتھ منعقد کرایا گیا تھا اس کے بعد ہم ہر فورم پر احتساب کے لیے خود کو پیش کرتے ہیں ۔انہوں نے کہا کہ خادم اعلیٰ پنجاب کے ویژن کو آگے لیجانے سے ہمیں کوئی روک نہیں سکتا غلط اعدادو شمار کے ذریعے پنجاب کی عوام کو گمراہ نہیں کیا جاسکتا۔ انہوں نے کہاکہ یوتھ فیسٹیول2012ءپر آنے والے اخراجات کے حوالے سے ایک 6رکنی کمیٹی بنائی گئی ہے جس میں فنانس ڈیپارٹمنٹ کے آفیسربھی شامل ہیں اس فنانس کمیٹی کے ریکارڈکو4رکنی کنسلٹنٹ اکاﺅنٹس کمیٹی اس کی جانچ پڑتال کرےگی جس کے بعد اس کوحتمی منظوری کیلئے کنسلٹنٹ ایڈیٹر کے پاس بھجوایاجائے گا۔

مزید : ایڈیشن 1