کسی غیر ملکی فوج کو پاکستانی سر زمین پر آپریشن کرنے کی اجازت نہیں دینگے :دفتر خارجہ

کسی غیر ملکی فوج کو پاکستانی سر زمین پر آپریشن کرنے کی اجازت نہیں دینگے :دفتر ...

اسلام آباد(آن لائن)پاکستان نے عالمی دنیا پر ایک بار پھر واضح کیا ہے کہ اس کے ایٹمی اثاثے محفوظ ہیں، کسی کو ایٹمی اثاثوں کی سیکورٹی سے متعلق فکر مند ہونے کی ضرورت نہیں ،پاکستان دہشتگردوں کے خلاف از خود کارروائی کی پوری صلاحیت رکھتا ہے،غیر ملکی افواج کو پاکستانی سرزمین پر کسی قسم کی کارروائی کی اجازت نہیں ،پاکستان شام میں بلاکسی مداخلت دیرپا امن کا خواہاں ہے،شام کی (او آئی سی) کی رکنیت کی منسوخی کا فیصلہ تنظیم کا ہے،پاکستان کانہیں،امریکہ کے ساتھ سیاسی،اقتصادی اور سیکورٹی امور پر تعاون بڑھانے کے حوالے سے بات چیت جاری ہے،پاک افغان سرحدی حملوں کی روک تھام اور گولہ باری سے پیدا شدہ کشیدگی پر افغان حکومت اور ایساف افواج کے ساتھ رابطے میں ہیں،پاکستان اپنے جوہری اثاثوں اور کم از کم ایٹمی صلاحیت کا حق محفوظ رکھتا ہے،شمالی وزیرستان میں آپریشن کافیصلے پر کسی قسم کے غیر ملکی دبا کو قبول نہیں کیا جائے گا،دفتر خارجہ کے ترجمان معظم خان کا جمعرات کے روز ہفت روزہ بریفنگ کے دوران صحافیوں کے سوالات کا جواب دیتے ہوئے کہنا تھا کہ پاکستان کے ایٹمی اثاثے محفوظ ترین کمانڈ اینڈ کنٹرول میں ہیں، کسی کو پاکستانی اثاثوں کے حوالے سے فکر مند ہونے کی ضرورت نہیں ،امریکی وزیردفاع لیون پنیٹا کے بیان پر ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے دفتر خارجہ کے ترجمان کا کہنا تھا کہ پاکستان دہشتگردی کے خلاف جاری جنگ جاری رکھے ہوئے ہیں اور پاکستان اپنے سٹرٹیجک اثاثوں سمیت ملک میں امن وامان کی بحالی کی پوری صلاحیت رکھتا ہے،معظم علی خان کا کہنا تھا کہ پاکستان ایک آزاد اور خودمختار ملک ہے، کسی غیر ملکی قوت کو پاکستان کے قبائلی علاقوں سمیت پاکستان کے کسی بھی حصے میں کارروائی کی اجازت نہیں دی جائے گی، پاکستان شمالی وزیرستان میں دہشتگردوں کے خلاف آپریشن کا فیصلہ از خود کرنے کا حق محفوظ رکھتا ہے اور اس سلسلے میں کسی بھی قسم کا دباقبول نہیں کیا جائے گا،پاکستان امریکہ کے ساتھ دہشتگردوں کے خلاف مئوثر کارروائی کے انٹیلی جنس تعاون جاری رکھے ہوئے ہے،ترجمان کا کہنا تھا کہ پاکستان امریکی انتظامیہ کے ساتھ سیاسی،اقتصادی اور سیکورٹی امور پر تعاون پر بات چیت جاری رکھے ہوئے ہیں اور اس سلسلے میں حوصلہ افزاءاشارے میلیں،دونوں ممالک یسرے کے ساتھ طویل بنیادوں پر دو طرفہ تعاون کے خواہاں ہیں اور اس سلسلے میں مشترکہ مفادات پر کام کر رہے ہیں۔ ترجمان کا کہنا تھا کہ پاکستان نیوکلیئر صلاحیت کو کم از کم بنیادوں پر برقرار رکھنے کا حق محفوظ رکھتا ہے اور پاکستان کی ایٹمی صلاحیت کسی کے خلاف نہیں بلکہ پاکستان ایٹمی صلاحیت اپنے دفاع کو مضبوط بنانے کےلئے ہے،طالبان کے رہنما ملا عمر کے نائب ملا برادر کے ساتھ افغان حکام کی ملاقات سے متعلق سوال پر ترجمان وزارت خارجہ کا کہنا تھا کہ افغان حکام کی پاکستانی قید میں موجود طالبان رہنما ملا برادر سے ملاقات کی خبروں میں کوئی صداقت نہیں ،افغان سفارتخانے اور وزارت داخلہ کے ترجمان پہلے ہی ایسی کسی بھی ملاقات کی تردید کرچکے ہیں،صدر زرداری کی جانب سے مکہ کانفرنس کے دوران افغان صدر حامد کرزئی سے ملاقات اور عرب رہنماؤں کو افغانستان میں امن کی کوششوں میں تعاون کی پیشکش سے متعلق ترجمان دفتر خارجہ کا کہنا تھا کہ پاکستان افغانستان میں دیرپا امن کا خواہاں ہے اور اس سلسلے میں پاکستان ہر قسم کے تعاون کی پیشکش کو خوش آمدید کرے گا،شام میں جاری شورش پر دفتر خارجہ کے ترجمان کا کہنا تھا کہ پاکستان شام میں کشیدگی کے معاملے پر واضح مؤقف رکھتا ہے،پاکستان شام میں امن کی کوششوں کے حوالے سے اقوام متحدہ کے شام مےں امن کےلئے سابق نمائندے کوفی عنان کی6نکاتی فارمولے کی حمایت کرتا ہے۔

مزید : صفحہ اول