”لیڈی ہیلتھ ورکر ہوا تو نہیں کھائیں گی“سُپریم کورٹ کا آج تنخواہ دینے کا حکم

”لیڈی ہیلتھ ورکر ہوا تو نہیں کھائیں گی“سُپریم کورٹ کا آج تنخواہ دینے کا حکم

اسلام آباد (آن لائن ) سپریم کورٹ نے لیڈی ہیلتھ ورکروں کی تنخواہوں کی آج جمعہ تک ادائیگی کا حکم دے دیا ہے۔ چیف جسٹس افتخارمحمد چودھری نے کہا ہے کہ رقم وفاق سے چلی جاتی ہے، صوبوں میں بیٹھے بابوتنخواہیں روک لیتے ہیں۔چیف جسٹس افتخارمحمد چودھری کی سربراہی میں تین رکنی بنچ نے لیڈی ہیلتھ ورکروں کی تنخواہوں سے متعلق کیس کی سماعت کی۔ ڈپٹی اٹارنی جنرل نے عدالت کوآگاہ کیا کہ وفاق نے تنخواہیں جاری کردی ہیں، صوبوں کا کوئی مسئلہ آرہا ہے جس کی وجہ سے تنخواہوں کی ادائیگی رک گئی ہے۔ چیف جسٹس نے ریمارکس دیے کہ رقم وفاق سے چلی جاتی ہے۔صوبوں میں بیٹھے بابوتنخواہیں روک لیتے ہیں۔ جسٹس شیخ عظمت سعید نے استفسار کیا کہ جس شخص نے پیسے روکے کیا اسے پیسے ملے یا نہیں ۔ یہ پنجاب میں آزمایا ہوا فارمولہ ہے، جورقم روکے اس کی تنخواہ روک لو،، دیکھیں پھرکیسے تنخواہ جاری ہوتی ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ عید سے پہلے لیڈی ہیلتھ ورکروں کی تنخواہیں جاری کریں ورنہ عید کے بعد بہت سارے لوگوں کی تنخواہیں رک جائیں گی۔چیف جسٹس نے ریمارکس دیے کہ عید آرہی ہے۔ یہ صوبوں کی ذمہ داری ہے،، لیڈی ہیلتھ ورکر ہوا تونہیں کھا ئیں گی۔ جسٹس جواد ایس خواجہ نے ریمارکس دیے کہ لیڈی ہیلتھ ورکروں کوخیرات نہیں دے رہے، ان سے کام لے رہے ہیں۔ چیف جسٹس نے ڈپٹی چیئرمین پلاننگ کمیشن کوہدایت کی کہ وہ تنخواہوں کی آج تک ادائیگی یقینی بنانے کے احکامات جاری کریں۔ سپریم کورٹ نے تنخواہوں سے متعلق رپورٹ پیش کرنے کی ہدایت کرتے ہوئے سماعت آج تک ملتوی کردی۔

مزید : صفحہ آخر