دور حاضر میں بلڈ پریشر ایک پریشان کن مسئلہ بن گیا ،طبی ماہرین

دور حاضر میں بلڈ پریشر ایک پریشان کن مسئلہ بن گیا ،طبی ماہرین

لاہور ( پ ر) دورِ حاضر میں ہمیں صحت کے حوالہ سے جن امراض نے پریشان کیا ہوا ہے ان میں بلند فشار خون یا بلڈ پریشر ایک انتہائی پریشان کن مسئلہ بن کر سامنے آیا ہے ۔اس کے مریضوں میں بھی بڑی تیزی سے اضافہ ہو رہا ہے - بلڈ پریشر کے مرض میں تیزی سے اضافہ کی بڑی وجہ فطرت سے دوری ، ورزش کا فقدان ، پریشانیاں اور جدید طرز زندگی ہے - ان خیالات کا اظہار میڈیکل اکوپنکچر ایسوسی ایشن پاکستان کے زیر اہتمام بلڈ پریشر اسباب ، علامات اور تدارک کے عنوان کے تحت منعقدہ ایک طبی مذاکرہ سے خطاب کرتے ہوئے ڈاکٹر محمد محسن ،داکٹر عامر داؤد ،ڈاکٹر محمد رمضان ہاشمی ، ڈاکٹر محمد افضل میو، ڈاکٹر علی محمد بلال ، ڈکٹر حفیظ چوہان ، ڈاکٹر وسیم انور، ڈاکٹر شبیر عنائیت، داکٹر انعم حاجرہ اور ڈاکٹر صومیہ داؤد نے بلڈ پریشر کی زیادتی کے حوالہ سے اپنے مشاہدات اور تجربات بیان کیے اور اس موقع پرڈاکٹر محمدمحسن نے بلڈ پریشر کے اسباب پر گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ اکوپنکچر کے تحت بلڈ پریشر کا کامیاب علاج کیا جا سکتا ہے۔ڈاکٹر صومیہ داؤد ایم دی نے کہا کہ نمک کی زیادتی ، ورزش کا فقدان ، چکنائی کی زیادتی ، موروثیت،کولا مشروبات کا کثرت استعمال ،سگریٹ و شراب نوشی اور جنک فوڈ بلڈ پریشر کے بنیادی اسباب ہیں اس سے محفوظ رہنے کے لیے السی ،لہسن ،ادرک ، پیاز کے سوپ کا استعمال، متوازن خوراک اور مناسب ورزش ضروری ہے - انہوں نے کہا کہ شربت بزوری کے اجزائے نسخہ کا سفوف استعمال کرنے سے بلڈ پریشر نارمل ہو جاتا ہے ۔

مزید : میٹروپولیٹن 1


loading...